September 20, 2018

علماءوحفاظ کو اللہ پاک نے قرآن کریم کی تعلیم و تشریح کے لئے منتخب کیا ہے

علماءوحفاظ کو اللہ پاک نے قرآن کریم کی تعلیم و تشریح کے لئے منتخب کیا ہے
Photo Credit To Urduleaks

ممبئی ۱۳؍ مارچ/ علماء اور حفاظ اپنے مقام و مرتبہ کو پہچانیں ،احساس کمتری کے ہرگز شکار نہ ہوں اس لئے کہ اللہ نے اپنی ذات کے نور یعنی قرآن پاک کی تعلیم و تشریح کے لئے منتخب کیا ہے ،اور لوگوں کو اپنی مخلوقات کی خدمت میں مشغول کر رکھا ہے ۔ان خیالات کا اظہار مدرسہ اشرفیہ غیاث العلوم گونڈی کے زیر انتظام منعقدہ’’ تحفظ مدارس و جلسہ دستار بندی حفاظ کرام ‘‘کے عنوان سے جلسہ عام سے علماء کرام نے کیا ۔
عروس البلاد شہر ممبئی کے مسلم اکثریتی علاقہ گونڈی میں واقع مدرسہ اشرفیہ غیاث العلوم ،روڈ ۶ کے زیر اہتمام ایک جلسہ دستار بندی کا انعقاد ہوا۔جس میں ملک کی عظیم شخصیات نے شرکت کی اور ملک کے مختلف گوشہ کے ۷؍ حفاظ کرام کی دستار بندی عمل میں آئی ۔
مولانامحمد محسن خان قاسمی صدر جمعیۃعلماء گونڈی کی صدارت میں منعقدہ اجلاس میں مقرر خصوصی کی حیثیت سے مولا نامحمدشاکر صاحب قاسمی(پرنسپل عربک کالج انڈی بیجا پور(کرناٹک)نائب صدر جمعیۃعلماء کرناٹک نے تفصیلی خطاب کیا اور مسلمانوں کو قرآن کریم اور مدارس و مکاتب سے وابستہ ہونے کی ترغیب دی۔ قرآن کی برکتوں ،رحمتوں سے اپنے تجربات و مشاہدات کی روشنی میں عوام سکو آگاہ کیا ۔
حضرت مولانا محمدخورشید احمد صاحب قاسمی مد ظلہ مہتمم مدرسہ جامعہ مظفریہ میرٹھ،یوپی،خلیفہ مجاز حضرت مفتی مظفر حسین صاحب نور اللہ مرقدہ ناظم مظاہر علوم سہارنپور نے قرآن و حدیث کی روشنی میں قرآن اور خادمین قرآن ،مدارس و مکاتب کی حیثیت و اہمیت پر تفصیلی روشنی ڈالی۔
مولانا نے اپنے کلیدی خطاب میں علماء کے مقام و مرتبہ اور حفاظ کرام کی عظمت سے عوام کو روشناس کرایا خاص طور سے آخرت میں علماء اور حفاظ کی جو عزت و مرتبت ہے بڑے والہانہ اور دل نشیں انداز میں اس کی تشریح کی ،پورا مجمع حضرت کی دلپذیر تقریر سے محظوظ ہوا ،آپ کی پر مغز تقریر سے علم قرآن اور صاحب قرآن کی عظمت سامنے اآئی،آپ نے یہ بھی فرمایا کہ علماء ،حفاظ اپنے مرتبہ کو پہچانیں ،احساس کمتری کا ہر گز شکار نہ ہوں کہ اللہ تعالیٰ نے ان کو اپنی ذات کے نور یعنی قرآن پاک کی تعلیم و تشریح کے لئے منتخب کیا ہے ،اس کے بر عکس اور لوگوں کو اپنی مخلوقات میں مشغول کر رکھا ہے ۔
اس جلسہ میں جن خوش نصیب حفاظ کرام کی دستار بندی کی گئی ان میں عبد الرحمن ابن مبارک (مدھوبنی) افروز عالم ابن محمد ذاکر (دربھنگہ)محمد توحید ابن افروز(چمپارن)محمد مہتاب ابن شعیب (دربھنگہ)محمد سمیع ابن شعیب(دربھنگہ)محمد شمشیر ابن عبد القیوم (دربھنگہ)محمد شاہد ابن سہیم الدین (بنگال) شامل ہیں۔
جلسہ میں علماء و عوام بڑی تعداد میں موجود تھے،جن میں مولانامحمد صدر عالم قاسمی صاحب صدر مدرسہ اشرفیہ غیاث العلوم ، جنرل سکریٹری جمعیۃعلماء گونڈی،علاقہ کی با اثر شخصیت مولانا محمد اسید قاسمی جنرل سکریٹری جمعیۃعلماء شمال مشرقی زون ممبئی ،مولانانسیم احمد ندوی،مفتی اصغر خصوصیت کے ساتھ قابل ذکر ہیں۔ مفتی محمد شرف الدین قاسمی (امام و خطیب مسجد انوار ،گونڈی) مفتی محمد جعفر قاسمی (امام عمر مسجد چیتا کیمپ )نے نعت پاک پیش کی ،مولانا محمد اشرف علی نعمانی مہتمم مدرسہ اشرفیہ غیاث العلوم کے حسن انتظام اورمولاناعبد القادر فہمی کی خوبصورت نظامت میں کامیابی کی منزل پر پہونچا ۔آخر میں حضرت کیدعاپر جلسہ کا اختتام ہوا۔

Post source : Press note