November 21, 2018

عادل آباد کے رمس ہاسپٹل میں ڈاکٹرس کی لاپرواہی کی بنا ایک  بچہ سمیت حاملہ خاتون کی موت

عادل آباد کے رمس ہاسپٹل میں ڈاکٹرس کی لاپرواہی کی بنا ایک  بچہ سمیت حاملہ خاتون کی موت

عادل آباد 7- نومبر(اردولیکس) عادل آباد کے رمس ہاسپٹل میں ڈاکٹروں کی لاپرواہی کی بنا زچہ اور بچہ کی موت واقع ہوگئی۔تفصیلات کے مطابق عادل آباد کے موضع بھرمپور کی خاتوں گنگامنی کو منگل کی شب ڈلیوری کیلئے عادل آباد کے رمس ہاسپٹل میں شریک کرایا گیا۔ رمس ہاسپٹل کے ڈاکٹرس کی غیر ذمہ داری و عدم دلچسپی اور لاپرواہی و وقت پر صحیح علاج نہ کرنے کی بنا بچہ سمیت حاملہ خاتون کی موت واقع ہوگئی۔ اس اچانک حادثہ کی وجہ سے گنگامنی کے شوہر اور رشتہ داروں نے رمس ہاسپٹل کے ذمہ داران پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہاسپٹل کے روبرو بڑے پیمانے پر احتجاجی دھرنا منظم کیا۔ یہ دھرنا مسلسل 4 گھنٹے تک جاری رہا؛ گنگامنی کے رشتہ داروں نے حکومت سے پرزور مطالبہ کیا کہ انہیں انصاف دلایا جائے اور رمس میں ہورہی بے قاعدگیوں کو جلد درست کیا جائے؛ اس دھرنے کی وجہ سے وقتی طور پر گاڑیوں کی آمد و رفت کو بند کردیا گیا۔ پولس عہدیداران کو اس خبر کی اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی نرسمہا ریڈی نے پولس کی بھاری اکثیرت کے ہمراہ رمس ہاسپٹل پہنچکر حالات کو قابو میں کیا اور گنگامنی کے برہم رشتہ داروں کو انصاف دلانے کا تیقن دیا۔اس موقع پر دیگر سیاسی قائدین بی جے پی امیدوار پایل شنکر نے بھی گنگامنی کے شوہر و رشتہ داروں کو پرسا دیتے ہوئے انصاف دلانے کا یقین دلایا

Post source : Urduleaks news network