June 17, 2019

ہاسپٹل میں نکاح کی تقریب – خودکشی کی کوشش پر گھر والوں کا اچانک فیصلہ

ہاسپٹل میں نکاح کی تقریب – خودکشی کی کوشش پر گھر والوں کا اچانک فیصلہ

وقارآباد ۔11 جنوری ( اردو لیکس ) کیا آپ نے ہاسپٹل میں نکاح کی تقریب منعقد ہوتے دیکھی یا سنی ہے کیونکہ نکاح کی تقریب عام طور پر شادی خانوں،گھر یا پھر کسی مناسب مقام پر انجام دی جاتی ہے لیکن تلنگانہ کے ایک مقام پر نکاح کی تقریب ہاسپٹل میں انجام دی گئی ۔ہاسپٹل میں انجام دی گئی نکاح کی یہ تقریب کسی ڈاکٹر یا پھر ان کے رشتہ داروں کی نہیں تھی بلکہ ایسے جوڑے کی تھی جنھوں نے محبت کی شادی سے گھر والوں کے انکار پر خودکشی کی کوشش کرتے ہوئے ہاسپٹل میں زیر علاج تھے اب ہم اصل واقعہ کی طرف چلتے ہیں بتایا گیا ہے کہ وقارآباد ضلع کے دو مختلف گاوں سے تعلق رکھنے والے 23 سالہ نواز اور 20 سالہ ریشما بیگم ایک دوسرے سے محبت کرتے تھے بتایا گیا ہے کہ ریشما ،نواز کے بھائی کی سالی ہوتی ہے جب ریشما بیگم کے گھر والوں کو ان دونوں کی محبت کا علم ہوا تو انھوں نے یہ کہتے ہوئے اس شادی کو انجام دینے سے انکار کردیا کہ ایک ہی گھر میں دو لڑکیوں کو وہ نہیں دیں گے ۔اس فیصلہ کے بعد وقفہ وقفہ سے دونوں نے زہر کھا کر خودکشی کی ۔اور دونوں کو ایک ہی ہاسپٹل میں علاج کے لئے شریک کردیا گیا ۔جس پر دونوں کے گھر والوں نے اچانک فیصلہ لیتے ہوئے ہاسپٹل میں ہی ان کا نکاح کروادیا ۔

Post source : urduleaks news network