May 20, 2019

مانو میں عالمی یومِ سوشل ورک کے موقع پر”این جی او میٹ و نمائش“

مانو میں عالمی یومِ سوشل ورک کے موقع پر”این جی او میٹ و نمائش“

حیدرآباد، 20 مارچ (پریس نوٹ) مولانا آزاد نیشنل اردو ، شعبہ سوشل ورک نے” این جی او میٹ و نمائش“ کے ساتھ عالمی یوم سوشل ورک بھی کا اہتمام کیا۔کل منعقدہ اس پروگرام میں متعدد غیر سرکاری اداروں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ واضح رہے کہ شعبے سے جملہ 20 این جی اوز وابستہ ہیں جہاں طلبہ فیلڈ ورک کے لیے جاتے ہیں۔

صدر شعبہ، پروفیسرمحمد شاہد رضا نے اس اہم ملاقات اور یوم سوشل ورک کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ اجلاس میں این جی او کے نمائندوں اور شعبہ کے اساتذہ نے فیلڈ ورک کے دوران طلبہ کی مکمل کارکاردگی کا جائزہ لیا اور طلبہ کی صلاحیتوں کے بارے میں اپنے تاثرات پیش کیے، ساتھ ہی خیال ظاہر کیا کہ متعلقہ تنظیموں اور شعبے کے درمیان بہتر تعلقات کو اس طرز پر تقویت دی جائے کہ طلبا کو زیادہ سے زیادہ سیکھنے کا موقع فراہم ہو۔ اس موقع پر طلبا کی پیشہ ورانہ آموزش اور ان کے علم میں اضافے کے لیے لائحہ عمل بھی تیار کیا گیا۔ ابتدا میں فیلڈ ورک کو آرڈینیٹر محمد اسرار عالم نے شرکا کے استقبال سے کی۔ 

اس موقع پر پروفیسر پی ایچ محمد، ڈین اسکول برائے فنون و سماجی علوم کے ہاتھوں نمائش کا افتتاح عمل میں آیا۔ شعبے اور این جی اوز کے اشتراک سے طلبہ نے اپنے اسٹال اسکول برائے فنون و سماجی علوم کے احاطے میں لگائیں جہاں تدریسی و غیر تدریسی عملے اور دیگر شعبہ جات کے طلبا کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ 

بعد ازاں شام چار بجے شعبے میں عالمی یوم سوشل ورک منایا گیا۔ واضح رہے کہ سوشل ورک کی پیشہ ورانہ تنظیمیں ہر سال کوئی عنوان منتخب کرتی ہیں۔ اس سال کا موضوع ”انسانی تعلقات کی اہمیت کا فروغ“ تھا۔ موضوع کی مناسبت سے ایم ایس ڈبلیو سال اول اور دوم کے طلبہ نے مختلف زبانوں میں تقریریں کیں اور کوئز مقابلہ بھی ہوا۔ صدر شعبہ کے مشورے پر تمام اساتذہ، ریسرچ اسکالرز اور ایم ایس ڈبلیو سال آخر کے طلبہ نے اپنی زندگی کا کوئی اہم واقعہ کو بیان کیا جس سے انسانی تعلقات کی معنویت کی عکاسی ہوتی ہو۔ 

قبل ازیں گزشتہ ماہ 21 فروری کو عالمی یوم مادری زبان کے موقع پر بھی شعبے میں مختلف زبانوں میں تقریریں ہوئیں اور پوسٹرپریزنٹیشن کے ذریعے مادری زبان کی اہمیت و افادیت کو اجاگر کیا گیا۔ 8 مارچ کو عالمی یوم خواتین پرشعبے کے طلبا نے فیکلٹی کے احاطے میں پوسٹر میکنگ مقابلے میں شرکت کی۔ پوسٹرز کے ذریعے طلبا نے خواتین کے مسائل کو بہترین انداز میں پیش کیا۔پہلی، دوسری اور تیسری پوزیشن حاصل کرنے والے طلبا کو سرٹیفکیٹ اور انعامات دیے گئے ، ساتھ ہی دو طلبا کو ترغیبی انعامات ملے۔

 شعبے میں دو اہم موضوعات پرلکچر کا بھی اہتمام کیا گیا۔26 فروری کو ایم این جے کینسر ہاسپٹل کے میڈیکل آفیسر ڈاکٹر کرشنا چیتنیا نے کینسر اور اس سے بچنے کی تدابیر پر طلبا اور اساتذہ سے گفتگو کی۔ اسی سلسلے میں 5 مارچ کو ایک اور مفید اور کارآمد لکچر کا نوبالغین اور لائف اسکلز کے موضوع پر اہتمام کیا گیا۔ نیلوفر ہاسپٹل کی میڈکل آفیسر ڈاکٹر دیپتی سری نے نو بالغین کے لیے درکار صلاحیتوں پر تفصیلی گفتگو کی۔ اس موقع پر پروفیسر محمد شاہد اور صدر شعبہ پروفیسر محمد شاہد رضا نے بھی اظہار خیال کیا۔ 

 

 

Post source : Urduleaks news network