July 20, 2019

پیشہ ورفقیرخود زکوٰۃ دینے کے قا بل ہوتے ہیں،منبر و محراب فاونڈیشن

پیشہ ورفقیرخود زکوٰۃ دینے کے قا بل ہوتے ہیں،منبر و محراب فاونڈیشن
Photo Credit To file

حیدرآباد 14 مئی (اردولیکس) حید رآباد کی سرزمین اپنے اندر رواداری ، محبت اور ہمدرد ی رکھتی ہے ۔ یہاں کے عوام و خواص برادری ،علاقہ ، مسلک ، زبان اور مذہب کا لحاظ کئے بغیر انسانیت کی بنیاد پر مجبوروں کی مدد کو اپنی اخلاقی ذمہ داری سمجھتے ہیں ، جن کے مالی تعاون سے ایک طرف غریبوں کی غربت دور ہوتی ہے تو دوسری طرف دینی مدارس اور دینی ادارے اپنے دینی و علمی و ملی مقاصد میں کامیابی حاصل کر رہے ہیں ، یہ خوش آئند بات ہے کہ یہاں کے زندہ دل افراد زکوٰۃ کے ساتھ ساتھ صدقات وعطیات اور ایصال ِثواب کے عنوان سے بھی دل کھول کر خرچ کرتے ہیں ، لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ مختلف ریاستوں سے غیر مستحق پیشہ ور فقیروں کی ٹولیاں حیدرآباد کے مختلف محلہ جات میں پھیلے ہوئے ہیں اور نت نئے انداز میں یہ پیشہ ور فقیر لوگوں سے مانگ رہے ہیں ، حقیقت یہ ہے کہ اسی فیصد سے زائد یہ پیشہ ور فقیر مستحق نہیں ہوتے ،ان کو زکوٰۃ دینا اور مالدار کو زکوٰۃ دینا دونوں برابر ہے جس طرح مالدار آدمی زکوٰۃ د کا مستحق نہیں ہے اسی طرح یہ پیشہ ور فقیر بھی زکوٰۃ کے مستحق نہیں ہیں ،ان خیالات کا اظہار منبر و محراب فاونڈیشن کے بانی و محرک مولانا غیاث احمد رشادی نے اپنے صحافتی بیان میں کیا اور کہا کہ مالدار اپنی زکوٰۃ کی رقم کو ایسے غیر مستحق ڈھونگی اور پیشہ ور فقیروں کو دیکر اپنی زکوٰۃ ضائع نہ کریں ،ہمارے شہر میں خود ایسی سلم بستیاں ہیں جہاں ہزاروں کی تعداد میں غربت کاشکار ،مصیبت زدہ اور مجبور وبے بس افراد ہیں جن کے احوال کو جاننے میں کوئی زیادہ وقت بھی نہیں نکلتا ،اگر مالدار اپنی زکوٰۃ کی رقم ان مستحق افراد تک پہنچ کر دیں اور ہمارے شہر کے بڑے اور چھوٹے بیسیوں ایسے مدارس ہیں جہاں زکوٰۃ کے مستحق طلبہ تعلیم حاصل کررہے ہیں ، ان تک پہنچ کر دیں یا ایسی تنظیموں کو دیں جن کے پاس ہزاروں مستحق ومجبور افراد کی تفصیلات موجود ہیں تو یقینا ہماری زکوٰۃ صحیح استعمال ہوگی ۔

Post source : press note