July 16, 2019

گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین ‌کا وشو شانتی پروگرام منسوخ۔ عادل‌آباد کے علماء ‌کی کامیاب نمایندگی

گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین ‌کا وشو شانتی پروگرام منسوخ۔ عادل‌آباد کے علماء ‌کی کامیاب نمایندگی

عادل آباد16/جون(پریس ریلیز)مستقر عادل آباد کے گایتری گارڈن میں 17/جون پیر کو گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین مالک ٹراویل پوائنٹ حیدرآباد کے منعقد شدنی پروگرام”وشوشانتی” کو عادل آباد کے علماء وحفاظ و مسلم سیاسی قائدین و دانشوران قوم و ملت نے پولیس سے کامیاب نمائندگی کے ذریعہ منسوخ کرادیا۔واضح رہے کہ ملعلون و گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین نے کچھ ماہ قبل صحابہ کرام خصوصاً حضرت امیر معاویہ رضی اللہ عنہ کی شان میں نازیبہ الفاظ استعمال کرتے ہوئے گستاخی کی تھی۔جس سے مسلمانوں کے جزبات کو مجروح کیا گیا۔مسلمان ہرگز انبیاء اور صحابہ کی شان میں گساخی بلکل ہی برداشت نہیں کرسکتے۔اور علماء کے مطابق صحابہ کی شان میں گستاخی کرنے والے کو ملعلون اور زندیق کہا جاتا ہے۔حال ہی میں حضر امیرمعاویہ رض کی شان میں گستاخی کرنے پر قاضی نجم الدین کے خلاف علماء حیدرآباد حضر مولانا جعفر پاشاہ مفتی غیاث الدین رحمانی و دیگر نے ایک پریس میٹ منعقد کرتے ہوئے قاضی نجم الدین کے خلاف تفصیلات سے آگاہ کیا تھا اور حیدرآباد پولیس میں شکایت بھی درج کروائی تھی۔گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین ان دنوں مسلسل سوشل میڈیا پر صحابہ رضی اللہ عنہم و علماء حضرات اور حکومت کے خلاف ویڈیو کے ذریعہ بیانات وائرل کرنے میں مصروف نظر آرہے ہیں۔اور اب آگے بڑھکر قرآن و حدیث کے غلط مطالب نکال کر عوام کو گمراہ کرنے کی غرض سے وشوشانتی اور امن کے نام پر پروگرام منعقد کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔اسی ضمن میں 17-جون کو عادل آباد میں ایک پروگرام منعقد کرنے جارہے تھے۔عادل آباد کے علماء و حفاظ و مسلم سیاسی قائدین و دانشوران قوم و ملت مولانا ابوذر صران ندوی؛حافظ منظور احمد؛حافظ کاظم مصباحی؛مولانا سید مبشر رشیدی؛صدر مجلس محمد فاروق احمد ویگر احباب نے محسوس کیا کہ اگر گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین کا اجلاس عادل آباد میں ہوتا ہے تو عادل آباد کی پرامن فضاء کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔انہوں نے ہنگامی طور پر شہر کے علماء و حفاظ و سیاسی قائدین و دانشوران قوم و ملت کا ایک مشاورتی اجلاس طلب کرتے ہوئے تمام کے متفقہ مشورہ سے اڈشنل ایس پی عادل آباد جناب موہن سر سے ان کے دفتر پہنچ کر تمام حالات سے واقف کروایا۔اڈیشنل ایس پی مسٹر موہن نے تمام حالات سے واقفیت حاصل کرتے ہوئے شہر کے امن و امان کی بقاء کیلئے گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین کے منعقد شدنی پروگرام کو منسوخ کرنے کے احکامات جاری کردئے۔اسپر علماء حفاظ و مسلم سیاسی قائدین نے اڈیشنل ایس پی جناب موہن کا شکریہ ادا کیا۔اس موقع پر مولانا ابوذر صران ندوی؛مفتی عثمان قاسمی نے کہا کہ جن اصحاب رسول (ص) کو درجہ صحابیت ملا ہو ان سے بغض و عناد رکھنا نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے بغض و عناد رکھنے کہ مترادف ہےجمیع اہل سنت کا متفقہ عقیدہ ہے۔امت مسلمہ کو جو دین شریعت ملی ہے وہ صحابہ رضی اللہ عنہم کے واسطہ سے ہی پہنچی ہے۔اسی لئے انکی شخصیت کو مجروح کرنے کے کسی بھی عمل کو برداشت نہیں کیا جاسکتا۔اس موقع پر علماء و حفاظ عادل آباد نے خصوصاً شہر یان عادل آباد و دیگر اضلاع کی عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے ایمان کی خود حفاظت کرتے ہوئے گستاخ صحابہ قاضی نجم الدین کو اور اسکے پروگرامس کا بائیکاٹ کریں۔اس وفد میں مولانا ابوذر صران ندوی؛مولانا اسلم صاحب؛حافظ منظور احمد؛مفتی عثمان قاسمی؛مولانا الیاس حسن مظاہری؛مولانا سید مبشر رشیدی؛حافظ کاظم مصباحی؛حافظ عطاءاللہ خان؛حافظ شیخ بشیر؛حافظ امجد خان؛حافظ عبدالعزیز؛مفتی عبدالوحید؛امیر مقامی جماعت اسلامی محمد ندیم ارشد؛صدر مجلس و نائب صدر نشین بلدیہ محمد فاروق احمد؛ٹی آر ایس قائدین سید ساجد الدین؛سراج قادری صاحب؛محتر یونس اکبانی؛صدر مدینہ مسجد جناب وقار احمد کے علاوہ علماء و حفاظ سیاسی قائدین دانشوران قوم و ملت و نوجوانان کثیر تعداد میں موجود تھے۔

Post source : urduleaks news network