October 23, 2019

وزیراعظم مودی نے جامعہ ملیہ اسلامیہ میں میڈیکل کالج کے ساتھ ہاسپٹل قائم کرنے کا دیا تیقن

نئی دہلی -9 جولائی (پریس ریلیز)وزیر اعظم   نریندر مودی نے جامعہ ملیہ اسلامیہ کے وائس چانسلرپروفیسر نجمہ اختر کی نمائیندگی پر یونیورسٹی میں میڈیکل کالج کے ساتھ ہی ایک ہاسپٹل کے قیام کے لئے ہر ممکن اپنے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

وزیر اعظم کو تعلیمی اور تحقیقی امور سے متعلق آگاہی کے ساتھ ہی پروفیسر اختر نے آئندہ سال منعقد ہونے والے یونیورسٹی کے صد سالہ جشن کی بابت تفصیلات بتائیں، اور اس کے لئے اسپیشل گرانٹ کی بھی گذارش کی۔ وزیر اعظم نے اس معاملہ پر مثبت انداز میں غور و فکر کا بھروسہ دلایا۔
وزیر اعظم نے جامعہ کے اعلیٰ تعلیمی اور تحقیقی معیار کی تعریف کرتے ہوئے اپنی حکومت کے تعلیم سے وابستہ مقاصد اور ہدف کے بارے میں بتایا۔ انہوں نے جامعہ ملیہ اسلامیہ کی دن دونی رات چوگنی ترقی پر خوشی کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ وہ جامعہ کے قومی اور بین الاقوامی رینکنگ جو اسے حالیہ دنوں میں ملی ہیں اس سے وہ واقف ہیں۔
وائس چانسلر نے وزیر اعظم کوبتایا کہ وہ مستقل اس بات کے لیے کوشاں ہیں کہ جامعہ ملیہ اسلامہ حکومت کے مقاصدجن میں تعلیم کے معیار کو بہتر کرنااور ایک مضبوط و توانا ملک کے خواب کو شرمندہ تعبیر بنانا ہے جس سے ملک کی تعمیر اور اس کے روح کو تقویت ملے۔
وزیر اعظم نے پروفیسر اختر کی قائدانہ صلاحیت اور ان کے کام کرنے کے طریقے کو سراہا جس میں تعلیمی اور انتظامی دونوں عملہ میں وہ پروفیشنل قابلیت اور ان کی صلاحیت کے مطابق انھیں ذمہ داریاں سونپتی ہیں۔
پروفیسر ااختر نے ویر اعظم ہند کو یونیورسٹی کی جانب سے مومنٹو اور پھولوں کا گلدستہ پیش کیا۔
 قابل ذکر ہے کہ پروفیسر اختر نے 1 جولائی 2019 کو عالیجناب صدر جمہوریہ ہند شری رام ناتھ کووند جو جامعہ کے وزیٹر بھی ہیں سے ملاقات کی تھی اور ان کے عہد میں جامعہ کی تعلیمی اور تحقیقاتی سرگرمیوں اور اس کی اصلاح کے لئے اٹھائے گئے جو اقدامات کیے گیے ہیں ان سے واقف کرایا تھا۔

Post source : Press release