September 22, 2019

آم اور دیگر پھلوں کو پکانے والا نیا پراڈکٹ این – رائپس

آم اور دیگر پھلوں کو پکانے والا نیا پراڈکٹ این – رائپس

حیدرآباد – 9 جولائی ( اردو لیکس)  حیدرآباد کی ہائی ٹن کمپنی نے آم، موز اور دیگر پھلوں کو روایتی طور پر پکانے کے لئے ایک پاوڈر تیار کیا ہے جو کاربائیڈ اور چین کے ایتھافان پاوڈر کا متبادل ہے کمپنی کے ڈائریکٹر شراون کمار اور دوسروں نے این – رائپس کے نام سے تیار کردہ پاوڈر پیاک کو متعارف کرتے ہوئے بتایا کہ آم، موز، سیتاپھل اور دوسرے پھلوں کو پکانے کے لئے کاربائیڈ کا استعمال ہوتا ہے جو انسانی جسم کے لئے کافی خطرناک ہے اس سے کینسر اور گردہ کی بیماریاں پیدا ہوتی ہیں برسوں سے ہندوستان میں پھلوں کو پکانے کے لئے کاربائیڈ استعمال کیا جاتا ہے اور حالیہ برسوں سے چین کا تیار کردہ ایتھا فان پاوڈر استعمال کیا جا رہا ہے یہ پاوڈر بھی صحت کے لئے کافی مضر ہے ہندوستان میں آم اور فیگر پھلوں کو پکانے کے لئے دوسرا کوئی روایتی طریقہ نہیں ہے اس لئے مجبوراً کاربائیڈ اور چین کا پاوڈر استعمال کیا جا رہا ہے شراون کمار نے کہا کہ ان کی کپمنی نے این – رائپس کے نام سے جو پاوڈر تیار کیا ہے اس سے کوئی نقصان نہیں ہے یہ ایتھلین گیاس کو تیار کرتے ہوئے پھلوں کو پکاتا ہے تین دن کے اندر آم، موز، پپائی اور دوسرے پھل پک جاتے ہیں اور پھل پکنے کے بعد ایک ہفتہ تک خراب نہیں ہوتے۔اس طریقہ سے پکانے والے پھلوں کا وزن بھی کم نہیں ہوتا۔اس کے برعکس کاربائیڈ سے پکاے جانے والے پھل کا وزن کم ہوجاتا ہے اور اس میں مٹھاس بھی نہیں ہوتی ۔ان کے پراڈکٹ سے پکاے جانے والے پھل میں مٹھاس رہتی ہے5 سال کے تجربہ کے بعد اس پاوڈر کو تیار کیا گیا ہے ان کے پراڈکٹ کو حکومت ہند کے کئی اداروں نے تسلیم کیا ہے انہوں نے کہا کہ یہ کمپنی کا پہلا پراڈکٹ ہے عنقریب زرعی پیداوار میں دوگنا کرنے والا پراڈکٹ اور پھلوں اور ترکاریوں کو تازہ رکھنے والے پراڈکٹس متعارف کئے جائیں گے ۔

Post source : Urduleaks news network