July 16, 2019

مدرسہ میں مسجد اور مندر کی تعمیر سے متعلق سلما انصاری کے فیصلے کی کئی شخصیتوں نے کی مخالفت

مدرسہ میں مسجد اور مندر کی تعمیر سے متعلق سلما انصاری کے فیصلے کی کئی شخصیتوں نے کی مخالفت

نئی دہلی – 14 جولائی ( اردو لیکس)  ہندوستان کے سابق نائب صدر جمہوریہ حامد انصاری کی بیوی سلما انصاری نے علی گڑھ میں ان کی جانب سے چلاے جانے والے چاچا نہرو مدرسہ میں مسجد اور مندر کی تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے جس پر مختلف گوشوں سے تنقید کی جا رہی ہے اور سلما انصاری سے مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ وہ اپنے فیصلے سے دستبردار ہوجائیں ورنہ یہ ملک بھر میں نظیر بن جائے گی اور ہندوتوا طاقتیں ملک کے دیگر مدرسوں میں بھی مندر کی تعمیر کا مطالبہ شروع کردیں گے ۔سلما انصاری کے اس اعلان کے بعد علی گڑھ کے رکن اسمبلی و سماج وادی پارٹی کے لیڈر ضمیر الله نے  سلما انصاری کے اس فیصلے کی شدید مذمت کی اور ان پر الزام لگایا کہ وہ فنڈس حاصل کرنے کے لئے اس طرح کا فیصلہ کیا ہے اس سے دیگر مدرسوں میں بھی مندر کی تعمیر کا مطالبہ شروع ہوجائے گا ۔علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے پروفیسر مفتی زاہد نے کہا کہ مسلمان کسی بھی صورت میں مدرسہ میں بتوں کے قیام کو برداشت نہیں کرے گا ۔

Post source : urduleaks news network