September 23, 2019

سرکاری بینکوں کے تعلق سے حکومت کا بڑا فیصلہ۔صرف یہ بینکس رہیں گے باقی

سرکاری بینکوں کے تعلق سے حکومت کا بڑا فیصلہ۔صرف یہ بینکس رہیں گے باقی
Photo Credit To imagine

نیی دہلی 30 اگست (اردو لیکس)مرکزی حکومت نے سرکاری بینکوں کے تعلق سے ایک اہم فیصلہ لیاہے۔ حکومت نے دس بینکوں کو ضم کرکے چار بڑے بینکس بنانے کا اعلان ہے۔ سرکار کے اس فیصلے سے ملک میں سرکاری بینکوں کی تعداد 12ہو جائے گی۔وزیر فینانس نرملا سیتا رامن نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اورینٹل بینک آف کامرس اور یونائیٹیڈ بینک کو پنجاب نیشنل بینک میں ضم کیا جائے گا۔ کینارا بینک میں سینڈیکیٹ بینک کا انضمام اور الہ آباد بینک کا انڈین بینک میں انضمام کیا جائے گا۔ یونین بینک کے ساتھ آندھرا بینک اور کارپوریشن بینک کا انضمام ہوگا۔انہوں نے مزید کہا کہ سال 2017 میں ملک میں 27سرکاری بینک تھے انضمام کا عمل مکمل ہونے کے بعد سرکاری بنکوںب کی تعداد 12تک پہنچ جایے گی۔ انھوں نے بینک ملازمین کی تشویش کو دور کرتے ہویے بتایا کہ انضمام کے باوجود بینک ملازمین کو برخواست نہیں کیا جائے گا۔حکومت کے بینکوں سے متعلق لیے گیے تازہ فیصلے کے بعد اسٹیٹ بینک آف انڈیا،بینک آف بڑودا، پنجاب نیشنل بینک، کینارا بینک‘یونین بینک، انڈین بینک، بینک آف انڈیا، سنٹرل بینک آف انڈیا، انڈین اورسیز بینک، پنجاب اینڈ سندھ بینک اور بینک آف مہاراشٹر کے علاوہ یوکو بینک باقی رہ جایں گے۔ قبل ازیں بھی حکومت کی جانب سے بعض سرکاری بینکوں کا انضمام کیا گیا ہے۔

Post source : Urduleaks news network