September 22, 2019

مانو میں فارسی کتب پر مشتمل گوشہ ایران کے قیام کی پیشکش۔ ایرانی نائب وزیر مسعود احمد وند کا اردو یونیورسٹی کا دورہ

مانو میں فارسی کتب پر مشتمل گوشہ ایران کے قیام کی پیشکش۔ ایرانی نائب وزیر مسعود احمد وند کا اردو یونیورسٹی کا دورہ

حیدرآباد 13ستمبر (پریس نوٹ) جناب مسعود احمدوند، نائب وزیر برائے ثقافت و اسلامی رہبری، ایران نے ایک وفد کے ہمراہ آج مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر اردو یونیورسٹی کی سید حامد مرکزی لائبریری میں فارسی کتب، رسائل اور معاون تحقیق مواد پر مشتمل ”گوشہ ¿ ایران“ کے قیام کی پیشکش کی گئی۔ ایرانی جامعات کے مانو کے ساتھ یادداشت مفاہمت کا جائزہ لینا بھی دورے کے مقاصد میں شامل ہے۔
جناب مسعود احمد وند نے ہندوستان کو مختلف مذاہب کا گلدستہ قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے عوام روحانی اقدار کے حامل ہیں۔ ملکی اتحاد کے لیے یہ ایک اچھی علامت ہے۔ مانو کے شعبہ فارسی کے مشاہدے کی خواہش، انہیں یہاں کھینچ لائی۔ انہوں نے مانو کی کارکردگی کو اطمینان بخش قرار دیتے ہوئے اپنی مسرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے یونیوورسٹی کو فارسی کی دو کتابیں تحفہ دیں۔
ڈاکٹر ایم اے سکندر نے مہمان وفد کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان میں تصوف اور روحانیت کے فروغ میں فارسی زبان کا کافی اہم رول رہا ہے۔ ہند – ایرانی تعلقات کافی قدیم اور مستحکم ہیں اور اس کا ثبوت حیدرآباد میں موجود ایرانی برادری ہے۔ انہوں نے مانو اور ایرانی جامعات کے درمیان طلبہ اور اساتذہ کے تبادلے کی تجویز بھی پیش کی۔
جناب محسن عاشوری، ڈائرکٹر کلچر ہاﺅز، اسلامی جمہوریہ ایران، ممبئی نے فارسی کو ہند – ایران تعلقات کا پل قرار دیا۔ اس موقع پر ایرانی وفد میں ڈاکٹر محمد ہادی فلاح، سید تمجید حیدر، پی آر او، قونصل خانہ ایران، حیدرآباد ، مانو سے پروفیسر سنیم فاطمہ، جوائنٹ ڈین اکیڈمک، شعبہ فارسی کے اساتذہ پروفیسر شاہد نوخیز اعظمی، صدر، پروفیسر عزیز بانو، ڈاکٹر عصمت جہاں، ڈاکٹر قیصر احمد، جناب عبدالرشید شیخ، اسسٹنٹ رجسٹرار ، ڈی ڈی ای اور دوسرے بھی موجود تھے۔ ایرانی وفد نے انسٹرکشنل میڈیا سنٹر، سید حامد مرکزی لائبریری اور شعبہ فارسی کا بھی دورہ کیا۔

Post source : press note