October 23, 2019

نام اور مذہب تبدیل کرنے کا مشورہ دینے والوں کو رکن پارلیمنٹ نصرت جہاں نے دیا یہ جواب!

نام اور مذہب تبدیل کرنے کا مشورہ دینے والوں کو رکن پارلیمنٹ نصرت جہاں نے دیا یہ جواب!

حیدرآباد -8 اکتوبر ( اردو لیکس) ترنمول کانگریس کی  رکن پارلیمنٹ اور بنگالی اداکارہ نصرت جہاں نے اسلام پسند قایدین پر غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں میرے نام کو تبدیل کرنے کا مشورہ دینے  کا کوئی اختیار نہیں ہے۔ واضح رہے کہ نصرت جہاں  نے اپنے شوہر نکھل جین کے ساتھ درگاپوجا میں حصہ لیا تھا پوجا تقریب میں ان کے شوہر نے ڈھول بجایا تھا اس نے رقص کیا تھا۔ مذہبی قایدین نے اس پر شدید اعتراض کرتے ہوئے  نصرت کو نام تبدیل کرنے کی تجویز پیش کی تھی۔مذہبی قایدین نے  کہا کہ اسلام میں دوسرے خداؤں کی پوجا کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ مذہبی بزرگ مفتی اسد نے  نصرت جہاں کی اس حرکت کو غیر اسلامی قرار دیتے ہوئے انہیں نام اور مذہب تبدیل کرنے کا مطالبہ تھا۔ دیگر مسلم قائدین نے بھی نصرت پر غم و غصے کا اظہار کیا ہے۔نصرت نے اس کا  جواب دیتے ہوئے کہا کہ انہیں میرا نام تبدیل کرنے کا مشورہ دینے کا کوئی حق نہیں ہے۔ کیوں کہ وہ لوگ مجھے نام نہیں دیا تھا تمام مذاہب کا احترام کرنا مذہبی ہم آہنگی کا ایک حصہ ہے۔ میری جس کلچر میں پیدائش اور پرورش  وہی میں اسی تعلیمات پر عمل کروں گی ۔

Post source : Urduleaks