June 03, 2020

تبلیغی جماعت کے پروگرام کی آڑ میں مخصوص طبقہ کے خلاف مہم،میڈیاکی انتہائی گھناونی اورشرمناک حرکت

تبلیغی جماعت کے پروگرام کی آڑ میں مخصوص طبقہ کے خلاف مہم،میڈیاکی انتہائی گھناونی اورشرمناک حرکت

  حیدرآباد- یکم اپریل ( اردو لیکس) ایک ایسے وقت جبکہ ساری دنیا کورونا وائرس کووڈ19- کو لیکر تشویش اور خوف کا شکار ہے،ملک میں میڈیا کی جانب سے تبلیغی جماعت کے پروگرام کی آڑ میں مخصوص طبقہ کے خلاف مہم انتہائی گھناونی اورشرمناک حرکت ہے،جس پر فوری روک لگنی چاہیے۔ہم سب اس موقع پر تبلیغی جماعت کے ساتھ ہیں۔امیر حلقہ جماعت اسلامی ہند تلنگانہ مولانا حامد محمد خان نے اپنے صحافتی بیان میں ان خیالات کا اظہار کیا۔ مولانا حامد محمد خان نے اس موقع پر کہا کہ تبلیغی جماعت کے جس پروگرام کو لیکر میڈیا میں مبا حث کئے جارہے ہیں وہ لاک ڈاؤن سے پہلے کا ہے اور اس دوران ملک میں ایسے کئی ایک بڑے مذہبی،سماجی،سیاسی پروگرامس اور دیگرتقاریب منعقد ہوئے، حتی کے پارلیمنٹ کا اجلاس بھی جاری تھا۔لیکن گذشتہ دو دنوں سے تبلیغی جماعت کے مرکزنظام الدین دہلی کو جس طرح میڈیا میں نشانہ بنایا جارہا ہے اس سے پتہ چلتا ہے کہ میڈیا کی ذہنیت اور ارادے کتنے ناپاک ہیں۔مولانا حامد محمد خان نے کہا کہ بعض گوشوں کی جانب سے ایف آئی آر درج کئے جانے کا مطالبہ کیا جارہا ہے جبکہ باقاعدہ لاک ڈاؤن کے بعد بھی مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی لاپرواہی اور بد نظمی کی وجہہ سے ہزاروں بلکہ لاکھوں کی تعدا د میں مزدور پیشہ افراد ایک مقام پر جمع ہوئے اور ایک جگہ سے دوسری جگہ منقل بھی ہوئے۔ امیر حلقہ نے کہا کہ تبلیغی جماعت کے ذمہ داروں نے بذات خود پولیس اور انتظامیہ کواپنے پاس پھنسے افراد کے مسائل سے آگاہ کیاتھااور ان کو واپس اپنے مقامات روانہ کرنے کی درخواست کی تھی۔ لیکن اس وقت جنتا کرفیو اور اچانک لاک ڈاؤن سے ٹرانسپورٹ کا نظام درہم برہم ہوچکا تھا جس کہ نتیجہ میں یہ لوگ تبلیغی مرکز میں پھنس گئے۔اس مسئلہ کو انسانی مسئلہ کے بجائے منفی رخ دینا قابل مذمت ہے۔جس پر روک لگنی چایئے اور کاروائی بھی کی جانی چاہیے۔اور ان لوگوں کے خلاف بھی کاروائی ہونی چایئے جنہوں نے ان لوگوں کی درخواست پر توجہہ نہیں دی۔مولانا حامد محمد خان نے اس موقع پر عوام سے اپیل کی سب کو متحد ہوکر ان حالات کا مقابلہ کرنا ہے۔اور ایسے نازک موقع پر کسی بھی قسم کے سازشوں سے چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔مولانا حامد محمد خان نے تمام مسلمانوں سے بھی اپیل کی وہ تمام مسلکی اختلافات سے بالا تر ہوکرمرکز نظام الدین کاساتھ دیں تاکہ نفرت آمیز اور گمراہ کن مہم چلانے والوں اور غیر ذمہ دارانہ رول ادا کرنے والی میڈیا کو شکست دی جاسکے۔آخر میں مولانا حامد محمد خان نے حالیہ عرصہ میں دہلی یا بیرون ملک سے تلنگانہ آئے ان تمام لوگوں سے بھی اپیل کی وہ رضاکارانہ طور پر خود دواخانہ سے رجوع ہوں اپنا چیک اپ کروایں اور انتظامیہ کا تعاون کریں یہ خود انکے اور انکے افراد خاندان کے لئے مفید ہوگا اور انسانیت کی بھی خدمت ہوگی۔

 

 

Post source : Urduleaks