August 14, 2020

ایس بی آئی کا نقلی برانچ – بینک کی دھوکہ دہی کا نیا طریقہ

ایس بی آئی کا نقلی برانچ – بینک کی دھوکہ دہی کا نیا طریقہ

حیدرآباد -11 جولائی ( اردو لیکس)  ہم نے اب تک بینک لوٹنے قرض حاصل کرتے ہوئے فرار ہوجانے اور بینک میں چوری کے واقعات کو سنا اور دیکھا ہے لیکن آج ایک نقلی بینک کو دیکھنے اور سننے جا رہے ہیں جی ہاں یہ ایک حقیقت ہے چند بدمعاشوں نے اسٹیٹ بینک آف انڈیا ( ایس بی آئی)  کا نقلی برانچ قائم کرتے ہوئے معصوم لوگوں کو ٹھگنے کی کوشش کی ۔لیکن ان بدمعاشوں کے نقلی بینک سے کوئی دھوکہ دینے اور کھاتہ داروں سے رقم وصول کرنے سے قبل ہی ان کا بھانڈا پھوٹ گیا اور پولیس کے ہاتھوں لگ گئے ۔تفصیلات کے مطابق تین افراد نے مل کر ایک نقلی ایس بی آئی برانچ قائم کی۔ یہ واقعہ تامل ناڈو کے ضلع کڈالورو کے پنروتی تعلقہ میں پیش آیا۔ نقلی برانچ  3 ماہ قبل قائم کیا گیا تھا تین افراد نے مل کر اس بینک کو قائم کیا ۔کمال بابو ان تینوں کا اصل ماسٹر مائنڈ ہے۔ اس کی والدہ بینک کی سابقہ ​​ملازم بتائی گئی۔ اس نے ایک معروف بینک میں ملازمت کی اور دو سال قبل ریٹائر ہوئی ۔ والد کا دس سال قبل انتقال ہوگیا تھا۔ ایک اور شخص  پرنٹنگ پریس میں کام کرتا ہے۔ اور تیسرا شخص ربر اسٹامپ بناتا ہے ان تینوں نے مل کر نقلی ایس پی آئی بینک قائم کر ڈالی ۔اور بینک کے لئے چیک بک، ڈپازٹ سلیپ، اسٹامپ اور دیگر چیزوں کو تیار کرلیا ۔اور کئی افراد کے کھاتہ بھی کھول دیئے ۔لیکن کھاتہ دار کو اس نئی برانچ پر شک آیا اور اس نے مین برانچ سے معلومات حاصل کیں ۔جس پر دھوکہ دہی کا کی معاملہ سامنے آیا ۔پولیس نے تینوں کو گرفتار کرلیا ۔پولیس تحقیقات میں پتہ چلا کہ انہوں نے کھاتہ داروں سے معمولی رقم ہی اکٹھا کی تھی

Post source : Urduleaks