November 26, 2020

ضلع محبوب نگر میں کاروان اردو کی شاندار پذیرائی

ضلع محبوب نگر میں کاروان اردو کی شاندار پذیرائی

حیدرآباد_ 21 نومبر ( پریس ریلیز) تلنگانہ  ریاستی اردو اکیڈمی کے زیر اہتمام ماہنامہ قومی زبان اور ماہنامہ روشن ستارے کی رکنیت سازی مہم کے سلسلے میں اردو کا گڑھ کہلائے جانے والے اہم اضلاع میں اردو اکیڈمی کے روانہ کردہ کاروان اردو کی ایک ٹیم مشہور شاعر اور معاون مدیر روشن ستارے جناب سردار سلیم کی نگرانی میں ضلع محبوب نگر پہنچی جہاں مقامی محبان اردو نے کافی جوش و خروش کے ساتھ اس کاروان اردو کا استقبال کیا، غالب ہال نزد مدینہ مسجد محبوب نگر کے ارد گرد پر رونق سماں دیکھا گیا، غالب ہال میں دونوں رسالوں کی رکنیت سازی کے لئے بڑی تعداد میں ارباب ذوق اکٹھا ہوئے، اس موقع پر جناب سردار سلیم نے میڈیا کے نمائندوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ یہ دور اردو اکیڈمی کی تاریخ کا سنہرا دور ہے، محمد رحیم الدین انصاری صدر نشین تلنگانہ ریاستی اردو اکیڈمی کی سرپرستی اور ڈاکٹر محمد غوث ڈائرکٹر سکریٹری کی نگرانی میں اردو کی ترقی و ترویج کے سلسلے میں جو خوش آئند اقدامات کئے جا رہے ہیں اور جس انداز میں تعلیمی منصوبوں کو روبعمل لایا جا رہا ہے اس سے اردو داں طبقے میں امید کی کرن جاگی ہے، نصاب سازی کے ذریعے، تعلیمی و تربیتی کورسس کے ذریعے، غیر اردو داں افراد کو اردو سے جوڑنے کی کوشش کے ذریعے اردو اکیڈمی کی نئی تاریخ رقم کی جا رہی ہے، ایسے ہی خوش آئند منصوبوں کی روشن کڑی بچوں کا ماہنامہ ”روشن ستارے” کی اشاعت ہے جو بچوں کی ذہنی نشوونما کے لئے، بچوں کو اپنے اسلاف کے کارناموں سے واقف کروانے کے لئے، ان کے اخلاق و کردار کو سنوارنے اور ان کے ذخیرہ علم میں اضافہ کرنے کے لئے یہ پرچہ مشعل راہ کا کام کر رہا ہے، تھوڑے ہی عرصے میں روشن ستارے نے ملک گیر مقبولیت حاصل کر لی ہے، انھوں نے مزید کہا کہ ماہنامہ قومی زبان جو برسہا برس سے اردو اکیڈمی کا ترجمان رسالہ ہے اب اس کے بھی خد و خال کافی نکھر گئے ہیں، ان دونوں رسائل کی رکنیت سازی اور اکیڈمی کی دیگر مطبوعات کے تعارف، تشہیر اور فروخت کی غرض سے کاروان اردو کی شکل میں اکیڈمی کا وفد محبوب نگر کے محبان اردو کے درمیان پہنچا ہے، اردو کے ان رسالوں کو زندہ رکھنے کے لئے خریداروں کی فہرست میں اضافہ وقت کی اہم ضرورت ہے، اس موقع پر ضلع محبوب نگر کے ذمہ دار شہریوں نے اردو سے محبت کا عملی ثبوت دیتے ہوئے جوق در جوق رکنیت سازی میں حصہ لیا اور بعض اصحاب نے اکیڈمی کی مطبوعہ بیش قیمت کتابیں بھی خریدیں، صبح 10 بجے سے دوپہر 3 بجے تک غالب ہال میں مسلسل خریداری کا حوصلہ افزا سلسلہ چلتا رہا،  

Post source : Press release