January 23, 2021

بالغ لڑکے اور لڑکی کو ایک ساتھ رہنے کا حق: الہ آباد ہائی کورٹ

بالغ لڑکے اور لڑکی کو ایک ساتھ رہنے کا حق: الہ آباد ہائی کورٹ

لکھنو_2 دسمبر ( اردو لیکس)الہ آباد ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ نوجوان بالغ لڑکے اور لڑکی کو  ایک  ساتھ  رہنے کا حق ہے۔ عدالت نے یوپی پولیس کو ہدایت دی ہے کہ وہ ایسے جوڑے کو تحفظ فراہم کریں جنہیں خاندان کے افراد مشکلات پیدا کررہے ہیں۔ جسٹس انجنی کمار اور جسٹس پرکاش پڈیا پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے آج فرخ آباد کی کامنی دیوی اور اس کے بوائے فرینڈ اجے کمار کی جانب سے دائر ایک رٹ پٹیشن کی سماعت کی۔بنچ نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ماضی میں بار بار یہ واضح کر چکی ہے کہ اگر کوئی لڑکی اور لڑکا بالغ ہیں اور باہمی رضامندی سے ایک ساتھ رہتے ہیں تو پھر کسی کو بھی حق نہیں ہے کہ انھیں پریشان کریں۔ اس جوڑے نے اپنی درخواست میں بتایا ہے کہ وہ دونوں بالغ  ہیں اور وہ دونوں ایک دوسرے سے محبت کرتے ہیں۔ درخواست گزار کا کہنا ہے کہ وہ گذشتہ چھ ماہ سے ایک ساتھ رہ رہے ہیں۔تاہم ، کامنی کے والدین اسے کسی دوسرے شخص سے شادی کرنے پر ہراساں کررہے ہیں۔ ہائی کورٹ نے سماعت کے دوران کہا کہ ہمیں لگتا ہے کہ درخواست گزاروں کو ساتھ رہنے کی آزادی ہے۔ کسی کو بھی ان کی ذاتی زندگی میں داخل ہونے کا حق نہیں ہے۔ دستور ہند کے آرٹیکل 21 کے تحت زندگی گزارنے کا حق بنیادی حق ہے۔ کسی کو بھی حق نہیں ہے کہ وہ کسی کو بھی ان کے زندگی اور آزادی سے محروم کرے۔

Post source : urduleaks