January 23, 2021

شادی شدہ بیٹی بھی متوفی باپ کی ملازمت پانے کی حقدار: جسٹس جے جے منیر کا تاریخی فیصلہ

شادی شدہ بیٹی بھی متوفی باپ کی ملازمت پانے کی حقدار: جسٹس جے جے منیر کا تاریخی فیصلہ

لکھنو_ 14 جنوری ( اردو لیکس ڈیسک) الہ آباد ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ شادی شدہ بیٹی بھی باپ کی موت پر سرکاری ملازمت کے لئے اہل ہے ہائی کورٹ کے جسٹس جہانگیر جمشید منیر نے اپنے فیصلہ میں کہا کہ شادی شدہ بیٹی کے ساتھ بھی اسی طرح سلوک کیا جانا چاہئے جس طرح بیٹے کو ایک متوفی سرکاری ملازم کے خاندان  کی حیثیت سے دیکھا جاتا ہے۔ ویملا سریواستو نے الہ آباد ہائی کورٹ میں ایک درخواست دائر کی ۔ جس میں پریاگراج ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر کے جاری کردہ ان احکامات  کو چیلنج کیا  کہ اگر سرکاری ملازم کی موت ہو تو شادی شدہ بیٹی کو خاندان کا فرد نہیں سمجھا جاتا اور اسے ملازمت فراہم کی جاسکتی ۔ درخواست کی سماعت کرنے والے جسٹس جے جے منیر کی بنچ نے کہا کہ اگر بیٹے کی شادی ہوتی ہے ، تب بھی اسے خاندان کے رکن کی حیثیت سے دیکھا جاتا ہے۔ اور بیٹا ہر فائدہ حاصل کرنے کا مستحق ہوتاہے۔ایسے میں بیٹی کے معاملے میں کیوں الگ دیکھا جا رہا ہے ؟ عدالت نے کہا  کہ شادی شدہ بیٹی کو کسی بھی امیدواری سے نااہل قرار دینا امتیازی سلوک ہے۔ ویملا سریواستو کے معاملے میں بھی عدالت نے ایسا ہی تاریخی  فیصلہ دیا ۔

Post source : Urduleaks desk