مغربی بنگال میں مجلس کو جلسوں کی اجازت نہ دینے پر بیرسٹر اویسی نے جتائی ناراضگی

حیدرآباد _ 25 ،فروری ( اردولیکس) بیرسٹر اسد الدین اویسی رکن پارلیمنٹ حیدرآباد و صدر کل ہند مجلس اتحادالمسلمین نے مغربی بنگال میں مجلس کو جلسوں کی اجازت نہ دینے کو افسوس ناک قرار دیا انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ دیگر جماعتوں کو جلسوں کی اجازت دی جارہی ہے لیکن مجلس کو جلسوں کے اہتمام کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے صدر مجلس نے ریاست میں جلد ہونے والے انتخابات کے آزادانہ اور منصفانہ انعقاد پر سوال اٹھائے کہا کہ ترنمول کانگریس کے قائدین پارلیمنٹ میں بڑی بڑی باتیں کرتے ہیں لیکن مغربی بنگال میں ان کا رویہ مختلف ہوتا ہے ان کے بیانات سے دوہرا معیار ظاہر ہو رہا ہے انہوں نے کہا کہ وہ یقیناً ترنمول کانگریس سی پی ایم کے خلاف اظہار خیال کریں گے صدر مجلس نے کہا کہ مسلم اقلیتوں اور نوجوانوں کی یہ خواہش ہے کہ ایک نئی سیاسی لیڈرشپ آئے ۔ جو جمہوریت کے لیے اچھی بات ہے صدر مجلس نے ان کی پارٹی کو جلسوں کی اجازت نہ دینے پر سوال اٹھایا اور پوچھا کہ یہ کونسی جمہوریت ہے انہوں نے سی پی ایم اور دیگر جماعتوں کے ووٹوں کی بی جے پی میں منتقلی کی بات تھی اور کہا کہ موجودہ حالت کے لیے ترنمول کانگریس اور سی پی ایم ذمہ دار ہے