این آر ایز کے لئے جگتیال کے ڈاکٹر شیخ چاند پاشاہ ایک ماڈل !

جگتیال _ 28 فروری ( اردولیکس) خلیجی ممالک میں روزگار کے لئے جانے والے افراد زیادہ سے زیادہ پیسہ کمانے، جائیداد بنانے، بچوں کو تعلیم دلوانے یا دیگر گھریلو ضرورتوں  اور ذمداریوں کو پورا کرنا ہی اپنی زندگی کا مقصد بنالیتے ہیں لیکن بہت کم  ہی ایسے افراد ہوتے ہیں جو خلیجی ممالک میں روزگار کے ساتھ سماجی خدمت بھی اپنی زندگی کا حصہ سمجھتے ہیں ایسے ہی چند افراد میں ڈاکٹر شیخ چاند پاشاہ بھی شامل ہیں جنھوں نے اپنی 20 سالہ خلیجی ممالک کی زندگی میں وہاں پریشان حال تلنگانہ اور دیگر ریاستوں کے شہریوں کی نہ صرف مدد کی۔بلکہ قانونی طور پر بھی مدد کی۔ہم بات کررہے ہیں تلنگانہ کے جگتیال شہر سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر شیخ چاند پاشاہ کی ۔جنھوں نے اب تک خلیجی ممالک میں فوت ہونے والے 750 سے زائد نعشوں کو اپنے وطن منتقل کروایا۔جن کا تعلق تلنگانہ اور آندھراپردیش سے تھا خلیجی ممالک کی جیلوں میں مقید سینکڑوں ہندوستانی افراد کی رہائی کے انتظامات کروائے۔ان کی سماجی خدمت اور انسانی ہمدردی کے جذبے کو دیکھتے ہوئے ویسڈم نمستے نامی تنظیم نے انھیں تہنیت پیش کی اور بسٹ سوشل ورکر کا توصیف نامہ عطا کیا۔ایک تقریب میں چپہ ڈنڈی کے رکن اسمبلی روی شنکر کے ہاتھوں یہ ایوارڈ دیا گیا