عصمت ریزی کا شکار لڑکی سے شادی کروگے؟ سپریم کورٹ کا ملزم سے سوال

نئی دہلی 2 مارچ (اردولیکس) عصمت ریزی کے ایک معاملہ میں سپریم کورٹ نے ملزم سے پوچھا کہ کیا وہ متاثرہ سے شادی کرنے کے لئے تیار ہے؟ عدالت نے ملزم کی گرفتاری میں چار ہفتے کی راحت دی۔
بابالغ لڑکی نے مہاراشٹر ریاستی حکومت کے ایک ملازم پر شادی کے جھوٹے وعدے کے بہانے عصمت ریزی کا الزام عائد کیا ہے اوریہ معاملہ عدالت عظمیٰ تک پہنچا۔ چیف جسٹس بوبڈے، جسٹس ایس بوپنا اور جسٹس وی رما سبرامنیم کی بنچ نے معاملہ کی سماعت کے دوران ملزم سے پوچھا کہ کیا وہ متاثرہ سے شادی کرسکتا ہے؟ عدالت نےعہدیداروں کو یہ بھی حکم دیا کہ عرضی گزار کو اگلے چار ہفتوں تک گرفتار نہیں کیا جائے۔ بنچ نے ملزم سے کہا کہ اگروہ متاثرہ لڑکی سے شادی کا خواہشمند ہے تواس کی مدد کی جاسکتی ہے۔