حیدرآباد میں 54 فیصد افراد میں کورونا آیا اور چلا گیا !

حیدرآباد _ 4 مارچ ( اردولیکس) حیدرآباد میں کورونا وائرس سے متعلق اہم ڈیٹا سامنے آیا ہے۔ سی سی ایم بی ، آئی سی ایم آر ، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف نیوٹریشن اور بھارت بائیوٹیک کے مشترکہ طور پر کئے گئے ایک سیرولوجیکل سروے میں انکشاف ہوا ہے کہ حیدرآباد میں 54 فیصد لوگوں کو پہلے ہی کورونا وائرس آکر چلا گیا ۔ سائنس دانوں نے 9،000 نمونوں کی جانچ کی اور جس میں پتہ چلا کہ حیدرآباد میں  54 فیصد  افراد میں کورونا کے  اینٹی باڈیز  پائی گئے ۔ حیدرآباد کے 30 وارڈوں میں  9 ہزار افراد کی جانچ کی گئی جن میں ہر وارڈ سے 300 نمونے لئے گئے۔ ان کی عمر 10 سال سے زیادہ تھی۔

اس سروے میں مزید دلچسپ بات سامنے آئیں۔ کچھ وارڈوں میں  70 فیصد افراد میں اینٹی باڈیز پائی گئیں۔ دیگر وارڈوں میں  30 فیصد افراد  میں اینٹی باڈیز پائی گئیں۔ تحقیق میں انکشاف ہوا ہے کہ مردوں سے زیادہ خواتین میں اینٹی باڈیز پائی گئیں۔ 56٪ خواتین میں اینٹی باڈیز دیکھی گئی جبکہ 53٪ مردوں میں اینٹی باڈی ہوتی ہے۔

سروے میں انکشاف ہوا کہ حیدرآباد کے بیشتر افراد کو یہ نہیں معلوم  ہوا کہ ان میں کورونا وائرس کب آیا اور کب چلا گیا۔