عالمی یوم خواتین کے ضمن میں سوشیل ویلفیر ریسیڈنشیل سوسائٹی کی تقریب سے رکن کونسل کویتا کا خطاب

حیدرآباد، 6،مارچ( پریس ریلیز)۔معاشرہ میں خواتین کا تعلیم یافتہ ہوناضروری ہے۔ اگر خواتین تعلیم یافتہ ہوں گی تو معاشرہ بہتر ہوگا۔ ان خیالات کااظہار تلنگانہ رکن قانون ساز کونسل کلواکنٹلہ کویتا نے عالمی یوم خواتین کے ضمن میں تلنگانہ سوشیل ویلفیر ریسیڈنشیل سوسائٹی کے زیر اہتمام گھٹکیسر میں سوشیل ویلفیر ویمنس کالج میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ رکن کونسل کویتا نے ریاست، ملک اور دنیا بھر کی خواتین کو عالمی یوم خواتین کی پیشگی مبارکباد دی۔ کویتا نے کہا کہ ریاستی حکومت لڑکیوں اور خواتین کے بہبود کی پابند عہد ہے اور ریاست کی تشکیل کے بعد ٹی آر ایس حکومت کی جانب سے خواتین و لڑکیوں کیلئے کئی فلاحی اسکیمات نافذ کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لڑکیوں کو بہتر تعلیم مہیا کرنے کی غرض سے حکومت نے کئی ایک تعلیمی ادارے قائم کئے ہیں جن میں اسکولس اور کالجس شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ریاست تلنگانہ کی ترقی و ترویج میں خواتین کا اہم کردار ہے۔ ریاست کی تقریباً نصف آبادی خواتین کی ہے اور اگر نصف آبادی تعلیم یافتہ ہوگی تو ریاست بہتر ہوگی۔ کویتا نے کہا کہ آج بھی خواتین و لڑکیوں کو بہت سی رکاوٹوں کا سامنا ہے اور ان رکاوٹوں سے نکلنے کیلئے لڑکیوں کا تعلیم یافتہ ہونا ضروری ہے۔ اگر لڑکیاں تعلیم یافتہ ہوں گی ان میں اعتماد پیدا ہوگا اور خود اعتمادی انہیں مسائل کا مقابلہ کرنے میں مدد کرے گی۔ کویتا نے کہا کہ کامیابی حاصل کرنے کیلئے کوئی شاٹ کٹ راستہ نہیں ہوتا۔ محنت، لگن اور عزم مصمم سے کامیابی ممکن ہے۔ تلنگانہ سوشیل ویلفیر ریسیڈنشیل سوسائٹی کے تحت چلائے جانے والے سوشیل ویلفیر کالجس کی ستائش کرتے ہوئے محترمہ کویتا نے کہا کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ سوشیل ویلفیر کالجس میں کامیابی کی شرح 90 فیصد سے زائد ہے۔ اس کے لئے انہوں نے سوسائٹی کو مبارکباد دی۔ کویتا نے کہا کہ تلنگانہ حکومت نے لڑکیوں اور خواتین کی جانب سے شروع کئے جانے والے اسٹارٹ اپس کی مدد کیلئے وی ہب کا قیام عمل میں لایا ہے جس سے کئی اسٹارٹ اپس کو مدد ملی ہے۔ یہاں یہ تذکرہ ضروری ہوگا کہ ہر سال 8 مارچ کو دنیا بھر میں عالمی یوم خواتین منایا جاتا ہے۔