عائشہ خودکشی کا نیا موڑ۔ شوہرکے مظالم اورحمل ساقط ہونے کا انکشاف

احمد آباد 7 مارچ (اردولیکس) ریاست گجرات کے احمدآباد میں خودکشی کرنے والی عائشہ کی خودکشی معاملہ کا ایک نیا موڑ اس وقت سامنے آیا جب قبل ازمرگ اس کی جانب سے لکھا گیا خط عدالت میں پیش کیا گیا۔اس خط میں شوہرکی جانب سے ڈھائے جانے والے مظالم کا ذکرکیا گیا ہے۔ یہ خط اس نے اپنے شوہرعارف کے نام تحریرکیا تھا جسے عدالت میں پیش کیا گیا۔ ابھی تک عائشہ کی خودکشی کے معاملہ صرف جہیز کیلئے ہراسانی کا ایک پہلو سامنے آیا تھا تاہم اس خط نے اوربھی کئی خلاصے کئے ہیں۔ عائشہ نے لکھا کہ اسکا حمل ضائع ہوگیا۔ عائشہ نے لکھا عارف میں تم سے پیار کرتی ہوں اور تم نے 2 زندگیاں برباد کردیں اورتم نے مجھ پرشک کیا میرا نام آصف کے جوڑ دیا جو کہ میرا سب سے اچھا دوست اوربھائی ہے، میں نے تمہیں کبھی دھوکہ نہیں دیا، عائشہ نے کہا مجھے کمرے میں محروس رکھا گیا، کھانا تک نہیں دیا گیا حالانکہ میں حاملہ تھی تم نے مجھے پلٹ کربھی نہیں دیکھا اورمجھے زدوکوب کیا جس کی وجہہ سے میرے بچے کی موت ہوگئی اور اب میں اس کے پاس جارہی ہوں۔