جنرل نیوز

تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم کی ٹی آر ایس امیدواروں کی تائید کا اعلان

حیدرآباد۔10/مارچ۔( پریس ریلیز)تلنگانہ کے بیشتر مسلم ایڈوکیٹس نے متفقہ طور پر گریجویٹ ایم ایل سی انتخابات میں ٹی آر ایس امیدواروں کے تائید کا اعلان کیا۔ تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم کا اہم اجلاس 10/مارچ کی شام میڈیا پلس آڈیٹوریم گن فاؤنڈری میں عمل میں آیا جس کی صدارت ریاستی صدر تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم و رکن وقف بورڈ جناب مولوی وحید احمد ایڈوکیٹ نے کی۔ جس میں مہمان خصوصی محمد فریدالدین صاحب ایم ایل سی و سابق وزیر کی حیثیت سے شرکت کی۔ جس میں مہمانان اعزازی کی حیثیت سے رکن تلنگانہ بار کونسل و رکن وقف بورڈ جناب ذاکر حسین جاوید ایڈوکیٹ، سید اکبرحسین چیرمین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن، محمد مظفراللہ خان ہائی کورٹ ایڈوکیٹ، جناب مرزا نثار احمد بیگ نظامی سپریم کورٹ ایڈوکیٹ، محمد نذیر احمد خان نے شرکت کی۔ اس پروگرام میں تقریباً 300 سے زائد مسلم وکلاء موجود تھے۔ جنہوں نے مکمل طور پر تلنگانہ ریاست میں ہونے والے ایم ایل سی انتخابات میں ٹی آر ایس کی تائید کا اعلان کیا اور ٹی آر ایس کے لئے پہلا ترجیح ووٹ ڈالنے کا اعلان کیا۔ اور فرید صاحب کے ذریعہ چیف منسٹر صاحب کو اور ٹی آر ایس کی تائید کا میسیج دیا۔ اس موقع پر رکن وقف بورڈ و ریاستی صدر تلنگانہ مسلم ایڈوکیٹس فورم نے فریدالدین صاحب کے ذریعہ حکومت سے جوڈیشیری میں مسلم وکلاء کو ان کے برابر حقوق دی جانے کی نمائندگی کی۔ کم از کم چار فیصد کے طور پر عدالتوں میں نمائندگی دی جائے گی۔ اور ہم سب کی طرف سے سابق میں چیف منسٹر صاحب سے بھی ملاقات کرکے نمائندگی کی گئی تھی کہ مسلم وکیلوں کو ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل، پبلک پراسیکیوٹر، گورنمنٹ پلیڈرس اور ایڈیشنل پبلک پراسیکیوٹر و دیگر عہدوں پر مسلم وکلاء کا تقرر کیا جائے۔ اور انہوں نے اس بات کا بھی اظہار کیا کہ اب فی الحال مسلم وکلاء کی نمائندگی بالکل صفر کے برابر ہے۔ اور تمام قانون ساز کمیشنوں میں کم از کم قانونی تعلیم حاصل کرنے والوں کو صدر نشین اور رکنیت دی جائے۔ کیوں کہ اس سے ریاست کا نام بھی بلند ہوگا اور سوسائٹی کا فائدہ ہوگا۔ اس موقع پر عالی جناب محترم مہمان خصوصی محمد فریدالدین ایم ایل سی نے کہا کہ میں اس بات کی نمائندگی چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ صاحب سے کروں گا۔ اور انشاء اللہ مسلم وکلاء کو ان کے حقوق دلوائے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست تلنگانہ ایک امن اور ترقی والی ریاست ہے۔ جس کے وزیر اعلیٰ خود ایک اقلیت دوست اور اردو داں ہیں اور وہ تمام مسلم مسائل سے واقف بھی ہیں‘ اور بڑے پیمانے پر اقلیتوں کی ترقی کے لئے اقدامات کئے ہیں۔ جن میں قابل ذکر اقلیتوں کی بڑے پیمانے پر تعلیمی پسماندگیوں کو دور کیا۔ غریب لڑکیوں کی شادی مبارک کے نام پر کڑوڑوں روپئے کی مدد کی۔ اور بلاکسی وقفہ کے برقی سربراہی اور ترقیاتی کاموں‘ مشن بگریتا، مشن کاکتیہ، اور آسرا پنشن،  اوورسیز اسکالرشپس اور دوسرے بڑے پیمانے پر مذہبی اداروں کو مکہ مسجد، جامعہ نظامیہ، انیس الغرباء کئی درگاہوں اور مساجدوں کے لئے بھی کروڑوں روپئے کے ترقی کام کروائے گئے اور جاری بھی ہے۔ اس موقع پر جناب سید اکبر حسین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن چیرمین، جناب ذاکر حسین جاوید بار کونسل ممبر، محمد مظفراللہ خان، نثار احمد بیگ نظامی اور دوسروں نے مخاطب کیا۔ اس موقع پر وکلاء کی کثیر تعداد موجود تھی۔ جن میں میر واجد علی خان ایڈوکیٹ، محمد ساجد ایڈوکیٹ، محمد مکرم علی، ذوالفقار عالم، ایم اے معظم، محمد عبدالکبیر، محمد ارشان احمد خان، محمد مظہر حسین، محمد شکیل احمد، پٹیل اور کئی نامور سینئر وکلاء اور جونیئر وکلاء قابل ذکر ہیں۔ آخر میں سینئر وکلاء اور معززین میں مرحوم محمد محمود حسین ایڈوکیٹ، محمد نظام الدین ایڈوکیٹ مرحوم، محمد مظفراللہ خان ایڈوکیٹ، ذاکر حسین جاوید ایڈوکیٹ، نثار احمد بیگ نظامی ایڈوکیٹ، نذیر احمد خان ایڈوکیٹ، میر واجد علی خان، محمد ساجد علی، مفتی ڈاکٹر مستان علی قادری جامعۃ المومنات، محمد فتح عفان مالک ایسٹرویا گروپ، ڈاکٹر فائزہ بیگم کو سرویس فار سوسائٹی ایوارڈس سے نوازا گیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button