قطر میں 20 مارچ سے نیا لیبر قانون _ اب ہر ورکر کو ملے گی ایک ہزار ریال تنخواہ

جدہ _ 17 مارچ ( اردولیکس گلف اسپیشل کرسپانڈنٹ )غیر ملکی تارکین وطن ورکرس کی حالت زار کو تسلیم کرتے ہوئے ، قطری حکومت نے ایک نیا لیبر قانون بنایا ہے جس میں کم سے کم اجرت کی حد میں اضافہ کیا گیا ہے۔ قطری حکومت نے اعلان کیا ہے کہ سرکاری اور خانگی شعبے میں ہر کمپنی تارکین وطن ورکرس کو ماہانہ ایک ہزار ریال (ہندوستانی کرنسی میں 20 ہزار روپے) اور کھانے اور رہائش کے لئے مزید 800  ریال تنخواہ دی جائے گی۔بتایا جاتا ہے کہ اس وقت قطر میں ملازمت کرنے والے غیر ملکی تارکین وطن ورکرس کو ایک ماہ میں 500 ریال اور 700 ریال کے درمیان تنخواہ دی جاتی ہے۔قطری حکومت نے گزشتہ سال اگست میں اعلان کیا تھا کہ  ملک ميں کسی بھی ورکر کی کم از کم ماہانہ تنخواہ  ایک ہزار ریال (275 امریکی ڈالر کے برابر) کر دی جائے گی  اور ساتھ ہی اب وہاں کام کرنے والے ورکر اس بات کے پابند بھی نہیں ہوں گے کہ اپنا روزگار بدلنے سے پہلے اپنے موجودہ آجر سے قانونی اجازت حاصل کریںنئے لیبر قانون کے تحت قطر میں تمام آجر اداروں کے لیے لازمی قرار دے دیا گیا ہے کہ وہ اپنے تمام ورکرس کو رہائش اور کھانے کی سہولیات بھی فراہم کریں یا پھر انہیں ان سہولیات کے لیے نقد رقم کے طور پر ماہانہ 800 قطری ریال کی اضافی رقم بھی دی جائے۔نیا قانون 20 مارچ سے نافذ العمل ہوگا۔