نیشنل

مالیگاؤں بم دھماکہ معاملہ _ خصوصی جج نے این آئی اے کو عدالت میں ایک سے زائد گواہوں کو پیش کرنے کا حکم دیا


ممبئی  25 مارچ( پریس ریلیز)مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ معاملہ میں گذشتہ تین دنوں سے این آئی اے نے کسی بھی سرکاری گواہ کو عدالت میں گواہی کے لیئے پیش نہیں کیا جس کی وجہ سے ملزم سمیر کلکرنی نے عدالت سے گذارش کی کہ وہ این آئی اے کو وارننگ دے کہ اگر وہ عدالت میں گواہوں کو پیش نہیں کریگی تو اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی کیونکہ سپریم کورٹ آف انڈیا اور ممبئی ہائی کورٹ نے مقدمہ کی جلداز جلد سماعت مکمل کیئے جانے کے احکامات جاری کیئے ہیں۔
آج عدالت میں گواہ نمبر 173 کو پیش ہونا تھا لیکن سماعت شروع ہوتے ہی سرکاری وکیل اویناس رسال نے عدالت کو بتایا کہ گواہ کی والدہ کو کرونا ہوگیا ہے جس کی وجہ سے سرکاری گواہ عدالت میں آنے سے قاصر ہے۔ سرکاری وکیل نے عدالت کو مزید بتایا کہ این آئی اے کی کوشش ہیکہ وہ عدالت میں روزانہ گواہوں کو پیش کرے لیکن موجودہ حالات میں گواہ ممبئی آنے سے کترا رہے ہیں اور بیرون ریاست کے گواہوں نے تو ممبئی آنے سے انکار کردیا ہے لیکن این آئی اے کی کوشش ہیکہ وہ عدالت میں روزانہ گواہوں کو حاضر کرے۔
خصوصی این آئی اے جج پی آر سٹرے کو بم دھماکہ متاثرین کی نمائندگی کرنے والی تنظیم جمعیۃعلماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کے وکیل شاہد ندیم نے بتایا کہ این آئی اے عدالت میں گواہوں کو پیش کرنے میں ناکام ثابت ہورہا ہے کیونکہ این آئی اے کے مطابق گواہ عدالت میں آنے سے کترا رہے ہیں لہذا عدالت کو گواہوں کے خلاف وارنٹ نکالنا چاہئے۔ایڈوکیٹ شاہد ندیم نے عدالت سے گذارش کی کہ عدالت این آئی اے کو حکم دے کہ وہ روزانہ عدالت میں دو گواہوں کو پیش کرے کیونکہ اگر ایک گواہ نہیں آیا تو دوسرے گواہ کی گواہی قلمبند کی جاسکتی ہے لیکن اگر ایک ہی گواہ کو بلایا گیا اور وہ نہیں آیا تو عدالت اور وکلاء کا پورا دن برباد ہوتا ہے۔
ملزم سمیر کلکرنی نے بھی عدالت کو بتایا کہ این آئی اے ملک کی سب سے بڑی تفتیشی ایجنسی ہے اور اگر انہوں نے ایمانداری سے کام کیا تو گواہوں کو عدالت میں حاضر کرنا ان کے لیئے مشکل کام نہیں ہے لیکن پتہ نہیں کیوں وہ ایسا نہیں کررہے ہیں۔
سمیر کلکرنی نے عدالت کو کہا کہ عدالتی کارروائی میں خلل ڈالنے والے وکلاء اور ملزمین پر عدالت کو سخت کاررائی کرنا چاہئے، سمیر کلکرنی کا اشارہ کرنل شریکانت پروہت کی جانب تھا جو عدالتی کارروائی میں خلل ڈالنے کی کوشش میں لگا رہتا ہے۔
خصوصی این آئی اے جج نے سرکاری وکیل اور مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ معاملے کے چیف تحقیقاتی افسر دوبے کو حکم دیا کہ وہ عدالت میں ایک سے زائد گواہوں کو پیش کرنے کے لیئے اقدامات کریں۔
ممبئی کی خصوصی این آئی اے عدالت ملزمین سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر، میجررمیش اپادھیائے، سمیر کلکرنی، اجئے راہیکر، کرنل پرساد پروہت، سدھاکر دھر دویدی اور سدھاکر چترویدی کے خلاف قائم مقدمہ میں گواہوں کے بیانات کا اندراج کررہی ہے، ابتک 172 گواہوں کی گواہی عمل میں ا ٓچکی ہے اور عدالتی کارروائی روز بہ روز کی بنیاد پر جاری ہے ۔

متعلقہ خبریں

Back to top button