مولانا سید احسن حسینی قادری روضہ رحمانیہ خطہ صالیحین کے سجادہ و نقییب نامزد

خانقاہ قادریہ بغدادیہ (پیر ریسڈنسی کالا ڈیرہ ملک پیٹ میں شہر کے معروف علمائے کرام و مشائخ عظام کی موجودگی میں حیدرآباد کی قدیم بارگاہ  روضہ رحمانیہ خطہ صالیحین نامپلی کے سجادہ و نقیب کا انتخاب کے ضمن میں کل بعد نماز ظہر ایک اھم تقریب کا انعقاد عمل میں آیا۔ محفل کا آغاز قرآت کلام مجید سے ہوا، شہر کے معروف نعت خوان حضرات ہدیہ نعت پیش کرنے کی سعادت حاصل کی۔ اس موقع پر متفقہ طور پر سابقہ نقیب روضہ رحمانیہ حضرت پیر بغدادی سید محمد حسینی قادری رفاعی(عظمت پیر بغدادیؒ) (جو لاولد تھے) ان کے وصال کے بعد آپ کے بردر زادہ مولانا سید احسن حسینی قادری رفاعی ارمان پیر بغدادی(فرزند اکبر مولانا سید احمد حسینی قادر پیر بغدادی) کو متفقہ طور پر حضرت پیر بُغدادیؒ کا جانشین اور روضہ رحمانیہ خطہ صالیحین دارالسلام روڈ نامپلی کا سجادہ نشین و نقیب نامزد کیا گیا۔ حضرت مولانا سید محمد قبول پاشاہ قادری شطاری( جانشین حضرت کاملؒ) نے بزرگوں کے طریق کے مطابق نو منتخب سجادہ کو عباء پہنایا اور دستار بندی کی اس موقع پر مولانا سید قبول پاشاہ شطاری نے اپنے مختصر خطاب میں کہا حضرت پیر بغدادیؒ خاموش طبعیت، منکسر المزاج، شفقت و محبت اور اخلاق حسنہ کے پیکر تھے۔ذکر و اذکار ان کی زندگی کا مشغلہ تھا۔ مولانا قبول پاشاہ نے نو منتخب سجادہ نشین سے ہم مشائخ امید کرتے ہیں کہ وہ بڑی محنت و جانفشانی سے اپنے تایا بالخصوص اپنے بزرگوں کے مشن کو جاری و ساری رکھیں گے۔ اس موقع پر مولانا سید محمود پاشاہ قادری زرین کلاہ(سجادہ نشین سلطان الواعظین)، مولانا سید احمد حسینی قادری رفاعی قادر پیر بغدادی، جناب سید احمد پاشاہ قادری زرین کلاہ (یم یل ائے یاقوت پورہ)، مولانا سید اصغر حسینی، جناب الیاس بن عوض الغیعطی، مولانا صوفی مظفر علی ابوالعلائی، مولانا سید کلیم اللہ حسینی کاشف پاشاہ، مولانا سید لیاقت حسین رضوی، مولانا حافظ محمد آصف عرفان قادری ودیگر علماء ومشائخ معززین شھر موجود تھے مولانا سید صامد حسینی قادری رفاعی نشوان پیر نے خیر مقدم کیا۔آخر میں بارگاہ خیر الانامﷺ میں نذرانہ سلام گذرانہ گیا دعاء پر اختتام عمل میں آیا