جنرل نیوز

آن لائن انٹر نیشنل تنظیم جزباتِ قلم کےتحت مشاعرہ کا انقعاد

جزباتِ قلم تنظیم کی جانب سے انٹرنیشنل مشاعرہ جس طرح اپنا سفر طے کررہا ہے وہ بیحد قابلِ تعریف ہے بلندی تنظیم اُتّرا کھنڈ کے بانی بادل صاحب نے لگاتار 200 گھنٹے چلنے والے مشاعرے کی مثال قائم کی ہے بادل صاحب نے ہر بڑے قلم کار کے ساتھ چھوٹے قلم کاروں کو بھی مدعو کرکے نوازا- اسی کے ساتھ لکھیم پور کھیری یوپی کے شاعروں میں مشہور و معروف شاعر جو لکھیم پور کھیری کی شان جناب اقبال اکرم وارسی صاحب بڑے فنکار و قلم کار کو اپنی محبتوں کا گلدستہ پیش کیا- اقبال صاحب معاشرے میں پھیلی ہوئی تمام برائیوں کی منظر کشی  بڑی سلیقے  سے پیش کرتے ہیں اقبال صاحب کا ایک شعر ہے *جگر کو چیر دیتی ہے کلیجا چھین لیتی ہے، بہو جب گود سے دادی کی پوتا چھین لیتی ہے* ساتھ ہی لکھیم پور کھیری یوپی سے جناب فیصل حبیب صاحب کو بلندی جزباتِ قلم نے بلندیوں پر پہنچایا-

فیصل صاحب سچ کو بیان کرتے ہوۓ کہتے ہیں  *یہ کاروبار دنیا کا کرم سے اُسکے چلتا ہے، وہ جب چاہے بجھا دیگا چراغوں کو اشاروں سے*   طنز کشی کرنے کا انداز بھی کچھ الگ ہے *ایک انگلی اٹھاؤگے کسی کی جانب، چار اٹھ جاتی ہیں خود پے یہ سمجھنا سیکھو* انہیں کی فہرست میں لکھیم پور کھیری یوپی سے ہی مشہور نام سادہ مزاج رکھنے والی محبتوں پیغام کی بہت چھوٹی شاعرہ اسماء صباؔ خواج صاحبہ نے کم عمری میں ہی ابھر کر بلندیوں کو سلام کرتے ہوۓ اپنے صوبہ لکھیم پور کھیری کا نام روشن کرتے ہوۓ صوبے کو ورڈ رکارڈ بُک میں شامل کروایا- صبا صاحبہ نے اپنی غزلوں کا سما باندھتے ہوئے سبکی محبتوں اور تالیوں کے ساتھ اپنے دامن کو بھر لیا- صبا جی نے ہر موضوں پر اشعار کا گلدستہ پیش کیا بڑے سلیقے اور شعور کے ساتھ صبا جی لوگوں تک اپنا پیغام پہنچانے کا معیاری ہنر رکھتی ہیں- انکا مشہور شعر *ہمکو پیغام دیتا ہے اپنا وطن، سبکو آپس میں رہنا سکھا دیجیۓ* قومی یکجہتی کی مثال پیش کرتے ہوۓ سبھی مذاہب کا استقبال کرتے ہوۓ کہتی ہیں- *نورِ حق دو جہاں پہ سدا غیب ہے، تو بھجن،پاٹھ،پرییر،ازانوں میں ہے* سہی راہ کو قائم کرتے ہوۓ پھر کہتی ہیں *ہر کوٸی تم سے ملنے کی خواہش رکھے، اپنا کردار ایسا بنایا کرو* سچ کی بنیاد پر عشقِ حقیقی کو ظاہر کرتے ہوۓ صوفیانہ انداز دیکھیۓ مضطرب دل نے یہ گواہی دی، روح کو چین بندگی سے ملے۔ محترمہ کی شاندار غزلوں نے دلوں کو جیت لیا سما باندھتے ہوئے محفل کی رونق بڑھاٸی- ساتھ ہی بادل صاحب اور حاضر سبھی شعراء حضرات نے *صبا جی اور انکے شوہر جناب خواج صاحب ایڈووکیٹ دونوں کا ایک ہی ماہ ایک تاریخ پے یومِ پیدائش ہونے کی بہت مبارکباد دیتے ہوئے تیسرا  اجوبہ قرار دیا-ساتھ ہی پروگرام بھی بڑی شاندار طریقے سے مکمل ہوا-

متعلقہ خبریں

Back to top button