تلنگانہ

جگتیال میں رابعہ سیفی کی عصمت ریزی اور قتل واقعہ کے خلاف صدر ملت اسلامیہ سنٹرل کمیٹی کی جانب سے زبردست احتجاج

جگتیال _  دہلی میں سیول ڈیفنس میں تعینات رابعہ سیفی کی عصمت دری کے بعد بیہمانہ قتل کا معاملہ شدت اختیار کرتا جارہا ہے۔ ہر طرف غم و غصہ پایا جا رہا ہے۔ ملزمان کی گرفتاری نہ ہونے اور پولیس کی تساہلی کے خلاف عوامی سطح پر شدید ناراضگی پائی جا رہی ہے۔

جگتیال صدر ملت اسلامیہ کی جانب سے بھی  مظلومہ رابعہ سیفی اور ان کے افرادِ خاندان کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کرنے کے لیے صدر میر کاظم علی کی قیادت میں آج شام بروزِ اتوار بعد نمازِ مغرب شہر کے قلب میں واقع ٹاور سرکل کے پاس ایک احتجاجی دھرنا منظم کیا گیا، نوجوانوں نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈز تھامے احتجاج کے دوران شرکاء نے رابعہ کے مجرموں، دہلی پولیس، مرکزی حکومت کے خلاف جم کر نعرہ بازی کی، اس موقع پر صدر ملت اسلامیہ میر کاظم علی نے میڈیا سے مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے رابعہ سیفی کے ساتھ پیش آمدہ اس وحشیانہ، ظالمانہ اور بیہمانہ واقعے کو“بیٹی بچاؤ” کا کھوکھلا نعرہ دینی والی مرکز کی بی جے پی حکومت کے منہ پر ایک زوردار طمانچہ قراردیتے کہا کہ جب قومی دارالحکومت دہلی میں پولیس ڈیفنس کی نوکری کرتے ہوئے رابعہ کے ساتھ یہ واردات ہوئی تو پھر عام لڑکیاں کہاں محفوظ ہوں گی۔

 

اس لیے حکومت، پولیس اور انتظامیہ سے ہمارا مطالبہ ہے کہ سی بی آئی جانچ کے ذریعے اس واقعہ میں ملوث دیگر مجرمین کو بھی سامنے لایا جائے اورنربھیا ایکٹ کا استعمال کرتے ہوئے گھناؤنے جرم کے مرتکبین کے خلاف سخت سے سخت عاجلانہ کاروائی کی جائے نیز رابعہ کے افراد خاندان میں سے ایک فرد کو سرکاری نوکری بھی فراہم کی جائے۔ مرکزی حکومت رابعہ کے مجرمین کے چہروں سے نقاب ہٹاتے ہوئے اُنھیں برسرِ عام پھانسی پر لٹکائیں، تاکہ آئندہ دیش کی کوئی اور بیٹی ایسی درندگی کا شکار نہ بنے ۔اس موقع پر سراج الدین منصور سابقہ وائس چیئرمین۔ معیز الدین۔صلاح الدین منا۔فیاض علی۔فیروزخان۔
سمیر آزاد۔ناہید۔عبدالباری ۔شہباز۔نوجوانوں کی کثیر تعداد موجود تھی

متعلقہ خبریں

Back to top button