اوٹکور میں گنیش وسرجن کے انتظامات کا جائزہ لینے ڈی ایس پی کا دورہ

 

اوٹکور۔(اردو لیکس۔محمد وسیم)اوٹکور منڈل مستقر میں گنیش وسرجن کے پیش نظر اوٹکور کا جاٸزہ لینے کیلٸے آج ناراٸن پیٹ ضلع ڈی ایس پی مدھو سدھن راٶ نے اوٹکور مستقر کے مختلف مقامات کے گنیش منڈپوں کا دورہ کیا۔بالخصوص جامع مسجد پنچ کے احاطہ پر تھوڑی دیر ٹھہر کر معاٸنہ و مشاہدہ کیا۔ واضح رہے کہ مستقر میں  4 سال قبل اکثریتی طبقہ سے تعلق رکھنے والے چند شر پسند عناصر نے فرقہ وارانہ فساد برپا کیا ہوا تھا جس کی وجہہ سے ہر سال حکومت تلنگانہ نے محکمہ پولیس کا کافی بھاری بندوبست کیا جاتا ہے۔گنیش وسرجن کا جلوس نکالنے سے 8 دن قبل ہی محکمہ پولیس کی جانب سے مستقر کی عوام پر بالخصوص شرپسند عناصر کڑی نظر رکھی جاتی ہے۔واضح رہے کہ اوٹکور تلنگانہ ریاست میں ایک حساس مقام جانا جاتا ہے کیونکہ یہاں پر ہر سال تہواروں میں محرم ہو یا گنیش وسرجن میں فرقہ وارانہ فساد اکثریتی طبقہ اقلیتی طبقہ کے نوجوانوں پر حملہ آور ہوتا ہے جس کی بنا پر سارے گاٶں میں فساد ہوتا ہے جس کی وجہہ سے عوام ڈر و خوف کے مارے گھروں میں ہی رہتے ہیں

 

۔اس موقع پر منڈل میں کتنے گنیش منڈپ بٹھاٸے گٸے ہیں ایک صحافی اوٹکور ایس آٸی پروتالو سے سوال کرنے پر انہوں نے کہا کہ اوٹکور منڈل میں جملہ 160 اور اوٹکور مستقر میں 21 گنیش مورتیوں کو بٹھایا گیا ہے اور اس کے علاوہ مستقر کے حساس مقامات پر 42 سی سی ٹی وی کیمروں کو بھی نصب کیا گیا ہے تاکہ ایسا کوٸی ناگہانی واقعہ پیش نہ آٸے جس کی وجہہ سے گنگا جمنا تہذیب میں ںبگاڑ آجاٸے۔ اس موقع پر ڈی ایس پی مدھوسدھن راٶ کے ہمراہ مکتھل سی آٸی شنکر اور ایس آٸی پروتالو کے علاوہ پولیس عملہ موجود تھا۔