وزیر داخلہ محمد محمود علی کے ہاتھوں جنگاوں کے محمد خواجہ مجتہدالدین ٹیچر کو تہنیت

 جنگاوں کی معزز اور معتبر ترین شخصیت جنگاؤں جامع مسجد کمیٹی کے سیکریٹری، ضلع حج سوسائٹی کے معتمد عمومی، تلنگانہ اسٹیٹ مینارٹی ایمپائز سرویس ایسوسی ایشن   جنگاؤں کے صدر ، حرکیاتی  اور محنتی شخصیت جناب محمد خواجہ مجتہدالدین  کو حکومت تلنگانہ کے ڈیجیٹل اسباق  کی کامیاب  پیش کش  پر وزیر داخلہ جناب محمود علی صاحب  نے توصیف نامہ پیش کی اور شال پوشی فرمائی۔

 

اس موقع  پر بات کرتے ہوئے انہوں نے  کہا کہ حکومت تلنگانہ  اردو مدارس اور اردو  اساتذہ کی  ترقی کے  لیے کوشاں ہیں معزز وزیراعلی جناب‌کے سی آر صاحب  نے اردو کی ترقی کے لیے لیے نہ صرف اردو کو ریاست تلنگانہ کی دوسری سرکاری زبان  بنایا کیا بلکہ کہ اس کی ترقیاتی اقدامات کرنے کے بھی وعدے کیے ۔ واضح رہے کہ  جناب محمد خواجہ مجتہدالدین ، ضلع پریشد ہائی اسکول مدور پر متعین ہیں اور اس وقت گورنمنٹ ڈائیٹ ہنمکنڈہ پر اضافی خدمات انجام‌دے رہے ہیں اور بہت سی سماجی  اور لسانی خدمات میں مصروف رہتے ہیں ہیں ایک ایسے  وقت جب ہر طرف  کورونا وباء کی زد میں میں لوگ تھے ا سکولز کالجز س اور  تعلیمی ادارے  بند تھے  ایسے وقت  میں اردو مدارس اور اردو طلبہ کے لیے وقت نکال کر  جان جوکھم میں ڈال  کر  تلنگانہ انسٹی ٹیوٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی تک جانا اور وہاں  پر اپنے اسباق کی ریکارڈنگ کروانا  اور بہترین انداز میں پیش کرنا یقینا قابل  تقلید اور قابل مبارک باد  اقدام ہے
جناب مجتہدالدین  کو  اس توصیف  پر شہر جنگاؤں  کے معززین بشمول مولانا عبدالحفیظ قاسمی، محمد مجیب الرحمن، محمد مسیح الرحمن ذاکر صدر جامع مسجد جنگاؤں، عبد المتین اطہر، معراج الرحمن، محمد حفیظ، جمال شریف، محمد تحسین، محمد اظہر الدین، محمد سلیمان حاجی، محمد جمال الدین کے علاوہ دوستوں اور بھی خواہوں کی کثیر تعداد نے دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کی ہے۔