رابعہ سیفی کے قاتلوں کو کیفرکردارتک پہنچایا جائے- سوریہ پیٹ جمیعت علماء کا مطالبہ

سوریاپیٹ: سوریاپیٹ جمعیت علماء (ارشد مدنی) جمعیت کی جانب سے مظلومہ رابعہ سیفی اور ان کے افرادِ خاندان کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کرنے کے لئے مفتی عبدالاحد فلاحی و حسامی، مولوی حافظ محمد اکرم ضلع نمائندہ سوریاپیٹ کی قیادت میں بروزِ اتوار سوریاپیٹ میں ایک مذمتی تقریب منعقد کی گئی۔اس تقریب میں اراکین جمعیت علماء سوریاپیٹ مفتی عبدالاحد فلاحی و حسامی نے اخباری نمائندوں سے مخاطب ہوکر کہا کہ رابعہ سیفی کے ساتھ پیش آمدہ اس وحشیانہ، ظالمانہ اور بیہمانہ واقعے کو“بیٹی بچاؤ” کا کھوکھلا نعرہ دینی والی مرکز کی بی جے پی حکومت کے منہ پر ایک زوردار طمانچہ قراردیتے ہوئے کہا کہ جب قومی دارالحکومت دہلی میں پولیس ڈیفنس کی نوکری کرتے ہوئے رابعہ کے ساتھ یہ واردات ہوئی تو پھر عام لڑکیاں کہاں محفوظ کیسے ہونگی۔
اس لئے حکومت پولیس اور انتظامیہ سے ہمارا مطالبہ ہے کہ سی بی آئی کی جانچ کے ذریعے اس واقعہ میں ملوث دیگر مجرمین کو سامنے لایا جائے اورنربھیا ایکٹ کا استعمال کرتے ہوئے گھناؤنے جرم کے مرتکبین کے خلاف سخت سے سخت عاجلانہ کاروائی کی جائے۔و نیز رابعہ سیفی کے افراد خاندان میں کسی ایک فرد کو سرکاری ملازمت فراہم کرتے ہوئے 2 کروڑ ایکسگریشیا بھی دیا جائے۔ مرکزی حکومت رابعہ کے مجرمین کے چہروں سے نقاب ہٹاتے ہوئے اُنھیں برسرِ عام پھانسی پر لٹکائیں تاکہ آئندہ دیش کی کوئی اور بیٹی ایسی درندگی کا شکار نہ بنے۔اس موقع پر مولوی حافظ محمد اکرم ضلع نمائندہ سوریاپیٹ نے اخباری نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان میں آئے دن لڑکیوں و خواتین کی حفاظت میں حکومت انتہائی کمزور و گھٹیا کردار ادا کر رہی ہیں۔ رابعہ سیفی کے قتل پر شدید غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان امن کا گہوارہ ہے۔ اس امن کے گہوارہ کی فضا کو مکدر کرنے کے لئے آئے دن شر پسندی کے واقعات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے۔ ملک کی امن و امان کی برقراری کیلئے ظالموں کو کیفر کردار تک پہنچانا ضروری ہوتا ہے۔
ورنہ فضا دن بدن بگڑتی چلی جارہی ہے۔ دلی شہر کے رہنے والی رابعہ سیفی کو جس بے دردی کے ساتھ درندہ صفت انسان نما جانوروں نے بدسلوکی و بے رحمی کے ساتھ سفا کانہ قتل کیا ہے۔ ان تمام قاتلوں کو جلد از جلد کیفر کردار تک پہنچانا حکومت ہند کی سب سے پہلے اولین ذمے داری بنتی ہے۔ اور انہوں نے کہا رابعہ سیفی کے قاتلوں کو حکومتِ ہند سے سزائے موت دینے کا پر زور مطالبہ کیا۔ اس پروگرام میں سرپرست جمعیت علماء سوریاپیٹ حافظ و قاری عبدالعزیز صاحب، حافظ عاشق الاہی، حافظ محمد شفیع، حافظ محمد ارشد، حافظ عبدالکریم، عبدالملک، سلیم بھائی، محمد عظمت خان، محمد نصیرالدین، مولانا جبار احمد، حافظ سعید، حافظ رضوان، محمد انور، منصور، عبدالرحیم و دیگر موجود تھے۔