جمعیۃ علماء نندی پیٹ کے زیر اہتمام مسلم منڈل کمیونٹی کا قیام

جمعیۃ علماء نندی پیٹ کے زیر اہتمام مسلم منڈل کمیونٹی کا قیام

ملک کے بدلتے حالات دن بہ دن مسلمان لڑکیوں کے ارتداد اور غیرمسلموں سے عشق ومعاشقہ کے واقعات کے پیش نظر جمعیۃ علماء منڈل نندی پیٹ کے صدرحافظ عبدالرشید صاحب ودیگر ذمہ داران مفتی فیاض مولانافیروز حافظ مبین اور حافظ عمران نے سرجوڑ کر ان حالات پر اپنی گہری تشویش کا اظہارکیا اور عملی طورپر اس حوالہ سے کام کا آغاز کرتے ہوے اپنے منڈل اور اس کے تحت آنے والے تمام ہی قریہ جات ودیہاتوں کے دینی مذہبی فلاحی ورفاہی کاموں نیز اصلاح معاشرہ کے حوالہ سے فکر کرتے ہوے مسلم منڈل کمیٹی کی بنیاد ڈالی جس کے تحت ان شاء اللہ مساجد میں طلباء وطالبات کے لےء صباحی مسای مکاتب کاکام کیا جاے گا اسی طرح ہر پندری دن میں خواتین کا اجتماع منعقد کرکے دین اسلام اور اس کے احکامات سے واقف کرایا جاے گا نیز اسی کمیونٹی کے جملہ 11افراد مل کر مسلمان لڑکیوں کی بے راہ روی کو روکنے اور تعلیم نسواں سنٹرس قائم کرنے کا عزم کیا ہے
مزید مسلمان لڑکیوں کو ہنر مند بنانے کےلےء کارچوب مہندی ڈیزائن اور سلای سنٹرس کا قیام بھی عمل میں لایا جاے
آج یہاں جمع ہوے منڈل کے سماجی کارکنان مختلف تنظیموں سے تعلق رکھنے والے نوجوان اور بیس دیہاتوں کے ائمہ کرام ومساجد کے صدور نے جمع ہوکر ا س بات کا اعلان کیا کہ جو بھی ہماری قوم کا مسئلہ ہوگا اس کو پولیس اسٹیشن یا کورٹ اور عدالتوں کے بجاے اس کمیٹی کے سامنےپیش کریں ان شاء ہر ممکنہ حد تک جلد سے جلد اس کا حل نکالاجاے گا

 

الحمد للہ اس مشاورتی اجلاس کی صدارت مولاناسید سمیع اللہ صاحب صدرجمعیۃ علماء نے فرمای مولانااسماعیل عارفی نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوءے کہا کہ باہمی مشاورت سے ہی ہمارے مسائل حل ہوسکتے ہیں اس لےء اس کمیٹی کا تعاون کریں جناب محمد افضل الدین آرگنائزر سکریٹری نے کہا کہ موجودہ حالات کو دیکھ کر ہمیں مستقبل میں دشمنان اسلام کی جانب سے ہونے والے حالات کا اندازہ کرکے ابھی سے سد باب کرنا بہت ضروری ہے سید محمد زکریا صاحب نے کہا کہ صرف نندی پیٹ ہی نہیں ضلع نظام آباد کے کئ مواضعات میں اس طرح مسلمان بچیوں کی بے راہ روی کے واقعات رونما ہوچکے ہیں ہم اس سلسلہ میں مستقل علماء کرام کی نگرانی میں کام کررہےہیں ان حالات میں ضروری ہیکہ پورے اتحاد واتفاق اور باہمی تعاون کے ذریعہ اس ارتدادی فتنہ کی سرکوبی کی جاے مولانا عبدالقیوم شاکر القاسمی نےکہا کہ اسلام ایک بہترین مذہب ہے اس کی تعلیمات باالکل صاف ستھری ہیں ہماری ذمہ داری ہیکہ ہم اپنوں اور برادران وطن تک اس کی تعلیمات کو عام کریں دین کے ابتدای بنیادی باتوں سے ہر مسلمان بچہ اور بچی کو واقف کرانا بیت ضروری ہے اس سوسائٹی کے قیام سے ان شاء اللہ بہت کام ہوگا

 

جناب نصیرالدین صاحب موظف لکچرارنے مخاطب کرتے ہوے کہا کہ کوی تحریک اور تنظیم جب تک علماء کرام سے مربوط ہوکر کام نہیں کرے گی وہ۔کامیاب نہیں ہوسکتی اس لےء کہ ماضی کی تاریخ کو اٹھاکر دیکھنے سے معلوم ہوتا ہیکہ جنگ آزادی ہوں یا تحریک ریشمی رومال یا مدارس کے جال بچھانے کی تحریک اور ترک موالات ودیگر تحریکات ان سب کی کامیابی کے پیچھے علماءکرام کی قربانیاں ان کی دعائیں اور محنتیں ہیں ان شاء اللہ اس مسلم منڈل کمیٹی کے قیام سے بڑا نفع ہوگا اور علماء کرام کی قیادت سے ہم سب کو فائدہ اٹھانا چاہیے

 

اخیر میں صدراجلاس مولانا سید سمیع اللہ صاحب نے خطاب کرتے ہوے کہا کہ ان حالات سے ہمیں گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے بلکہ اللہ سے اپنا تعلق مضبوط کرکے عملی اعتبارسے بیداری کا ثبوت دینا چاہیے مقامی عوام وخواص نے اپنے منڈل کی سیاسی سماجی دینی تعلیمی کیفیات کو بیان کرتے ہوےکہاکہ آپ لوگوں کی سرپرستی میں ہم ان شاء اللہ منڈل نندی پیٹ میں دینی ملی کاموں کا آغاز کرتے ہوے علاقہ کی ترقی کے لےء ہر ممکن کوشش کریں گے