تلنگانہ

امام مسجد کے ساتھ احترام سے پیش آنے پولیس کو وزیر داخلہ کی ہدایت

امام مسجد کے ساتھ احترام سے پیش آنے پولیس کو وزیر داخلہ کی ہدایت

ورنگل مسئلہ میں جمعیۃ علماء کی کامیاب نمائندگی۔مفتی محمود زبیر قاسمی کا اظہار تشکر

 

حیدرآباد17 / جنوری (پریس نوٹ) مولانا منور قاسمی جنرل سکریٹری جمعیۃ علماء ضلع ورنگل کے مطابق کچھ دن قبل شاہی مسجد ورنگل میں ایک نامناسب مسئلہ پیش آیا، جس کے باعث امام مسجد کے سلسلہ میں پولیس میں شکایت درج کی گئی۔ مسئلہ ورنگل کے ذمہ دار علماء و دانشوران کے درمیان میں رکھ کر حل کرلیا گیا اور دونوں فریقوں میں مصالحت کروادی گئی، لیکن اس دوران امام مسجد کے خلاف ایف آئی آر درج کی جاچکی تھی

اور اس ایف آئی آر کو لے کر متعلقہ پولیس اسٹیشن عہدیداران امام مسجد کو مستقل ہراساں کررہے تھے۔ حالانکہ مصالحت کے بعد دونوں فریق پولیس اسٹیشن پہنچے‘ علماء کی ایک بڑی تعداد پولیس اسٹیشن پہنچی، سبھی کی طرف سے یہ تقاضہ کیا گیا کہ ایف آئی آر کو ختم کیا جائے اور اس مصالحت کو بنیاد بناتے ہوئے امام مسجد کو ہراساں کرنا بند کیا جائے، لیکن متعلقہ پولیس اسٹیشن کے ذمہ دار اس سلسلہ میں کسی بھی اقدام کرنے سے گریزاں تھے اور مسلسل ہراساں کررہے تھے۔

اس خصوص میں جمعیۃ علماء تلنگانہ و آندھراپردیش کے جنرل سکریٹری حضرت مولانا مفتی محمود زبیر قاسمی صاحب دامت برکاتہم سے رابطہ کیا گیا اور ان کے کہنے پر جمعیۃ علماء ورنگل کا ایک وفد مولانا منور قاسمی صاحب، مفتی منہاج قیومی صاحب، امام صاحب، مولانا رحمت اللہ صاحب، حافظ سعید صاحب پر مشتمل حیدرآباد پہنچا اور ریاستی صدر مفتی غیاث الدین رحمانی صاحب مدظلہ کی ایما پر مفتی محمود زبیر قاسمی کی قیادت میں وزیر داخلہ سے ملاقات کی۔ وزیر داخلہ نے مسئلہ کا فی الفور نوٹ لیتے ہوئے متعلقہ پولیس اسٹیشن کے ذمہ دار کو ہدایت کی کہ وہ امام مسجد کے سلسلہ میں احترام سے پیش آئے اور کسی بھی قسم کے ناروا سلوک سے باز رہے۔ الحمدللہ گذشتہ تین دن سے اس خصوص میں رابطہ کیا جاتا رہا اور خوش آئند بات یہ ہے کہ پولیس اسٹیشن کے ذمہ داروں کی جانب سے امام صاحب کو ہراساں کرنے کا مسئلہ ختم ہوا، خود وزیر داخلہ نے فون پر مفتی صاحب سے حالات سے واقفیت لی۔ اس خصوص میں جمعیۃ علماء ورنگل کے ذمہ داران اور مفتی محمود زبیر قاسمی نے وزیر داخلہ کا شکر ادا کیا۔ .

متعلقہ خبریں

Back to top button