حیدرآباد میں کریٹیکل کیر یونٹ پر ڈاکٹروں کی دو روزہ کانفرنس

 حیدراباد-28 اگست( اردو لیکس) حیدراباد میں ساوتھ زون کریٹیکل کیر پر دو روزہ کانفرنس کا ہوٹل میرٹ میں افتتاح ہوا.جو 27 اور 28 اگست کو جاری رہے گی.ساوتھ زون سے تعلق رکھنے والے 500 نوجوان ڈاکٹرس 250 نرسیس اور پیرا میڈکل عملہ نے اس کانفرنس میں شرکت کی.کانفرنس کے افتتاحی سیشن خطاب کرتے ہوے کانفرنس کے چیرمین و ڈایرکٹر تھمبے اسپتال ڈاکٹر شیام سندر نے کہا کہ کسی بھی مریض کو نازک حالت میں انٹنسیو کیر یونٹ میں رکھا جاتا ہے جہاں 24 گھنٹہ ڈاکٹرس اور پیرا میڈکل عملہ اس مریض پر خصوصی نظررکھتا ہے 

ہر اسپتال میں 30 تا 40 فیصد بڈس آئی سی یو کے لئے مختص کیا جانا چاہیے لیکن خانگی اسپتالوں کی جانب سے آئی سی یو یونٹ کا قیام کافی دشوار کن بن گیا ہے آئی سی یو کے ایک بستر کے قیام کے لئے 50 تا 70 لاکھ روپیے کے اخراجات عاید ہوتے ہیں

انھوں نے کہا کہ شہری علاقوں میں عوام کی بدلتی طرز زندگی سے اچانک کئی بیماریوں کا شکار ہورہے ہیں ایسے موقع پر کریٹیکل کیر علاج انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے حکومتوں کی جانب سے عصری علاج پر زیادہ رقم خرچ نہیں کی جارہی ہے ایسے حالات میں خانگی اسپتالوں کو اہم رول ادا کرنے کی ضرورت ہے 

ڈاکٹر شیام سندر نے کہا کہ کارڈیالوجی,نیورالوجی,نیورو سرجری,آپتھالوجی جیسے بیماریوں کے علاج کے لئے عصری آلات آگئے ہیں کریٹیکل کیر یونٹ کے ذریعہ ایسے مریضوں کی زندگی کا بچانا آسان ہوگیا ہے

 ورنچی اسپتال کے ڈاکٹر ایس سرینواس نے کہا کہ دیہی, شہری اور میٹرو پولیٹن شہروں میں آئی سی یو کے بستروں کی کافی قلت ہے اور اس میں کام کرنے والے ڈاکٹرس اور پیرامیڈکل اسٹاف بھی ناتجربہ کار ہیں جس کی وجہ سے کئی دشواریاں پیش آرہی ہیں انھیں مناسب تربیت دینے کی ضرورت ہے کانفرنس سے میکس کیور اسپتال کے ڈاکٹر گھن شیام, کانٹینٹل اسپتال کے ڈاکٹر جے سرینواس اور دوسروں نے خطاب کیا.