جنرل نیوز

پونے میں عالمی انسانی حقوق کونسل کی نیشنل ورکر ایوارڈ کی تقریب کا انعقاد

مختلف ریاستوں کے کارکنوں اور سماجی لوگوں کو اعزاز سے نوازا گیا۔

 

لکھنٶ/ پونے: (پریس ریلیز)ریاست مہاراشٹر کے شہر پونے کے اعظم کیمپس اسمبلی ہال میں ملک کی مشہور سماجی تنظیم ورلڈ ہیومن رائٹس کونسل کی نیشنل ورکرز کانفرنس اور ایوارڈ کا اہتمام کیا گیا۔

جس میں عالمی انسانی حقوق کونسل کے سینکڑوں کارکنان اور مختلف ریاستوں کے معززین، قومی صدر ڈاکٹر ایم آر انصاری قومی چیف جنرل سکریٹری پرسون گوسوامی قومی چیف ایڈوائزر ڈاکٹر حاجی آئی اے ایس جامعہ نیشنل ورکنگ صدر مولانا انوار الحق نیشنل جنرل سکریٹری معراج انصاری ایڈوکیٹ ڈاکٹر جی ایس کمبوج اور چیف ایڈوائزر نے شرکت کی۔ مہمان قومی صدر ڈاکٹر ایم آر انصاری کو ڈاکٹر پی اے انعامدار نے ایوارڈ سے نوازتے ہوئے کہا کہ آج عالمی انسانی حقوق کونسل ملک کی تمام ریاستوں میں انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے کام کر رہی ہے۔

ہم اپنی سطح سے کوشش کر رہے ہیں کہ عالمی انسانی حقوق کونسل کی رپورٹ پیش کرتے ہوئے ہر غریب مزدور بے سہارا کو اس کا حق ملنا چاہیے۔ قومی ورکنگ صدر مولانا انوار الحق نے کہا  عالمی انسانی حقوق کونسل ملک بھر میں بڑی تعداد میں بے گناہوں کے مقدمات لڑنے کے لیے کام کر رہی ہے اور قیدیوں اور قیدیوں کی ہر طرح سے مدد کی گئی ہے، کئی ریاستوں میں قیدیوں میں ضرورت کی تمام اشیاء تقسیم کی گئیں۔

اور وہ لوگ جن کو عدالت نے بری کر دیا بلکہ ان پر جرمانہ بھی عائد کیا اور وہ جرمانہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے غربت اور مجبوری کی وجہ سے جیلوں میں بند ہیں تو جرمانہ ادا کرنے کے بعد ان کی رہائی کے لیے کام کیا جائے گا۔انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے ہر ریاست میں بیداری مہم چلائی گئی۔

مولانا انوارالحق نے ملک بھر سے آئے ہوئے اپنے عہدیداروں سے کہا کہ وہ علاقائی حکام کو ان لوگوں کے بارے میں شکایات کریں جو معصوم بچوں کے مستقبل سے کھیلتے ہیں اور انہیں ہوٹلوں، کارخانوں، کارخانوں وغیرہ میں کام کرواتے ہیں۔ اور ایسے لوگوں کے خلاف سخت ایکشن لینے کے لیے کام کریں۔  اگر کوئی افسر نہیں سنتا تو نیشنل ایگزیکٹو کو رپورٹ کریں۔  ایسے لوگوں کے خلاف فوری کارروائی کی جائے گی۔

ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومتیں اور مرکزی حکومت سپریم کورٹ کے حکم پر آلودگی کی وجہ سے مسجد مندر، گرودوارہ چرچ سے لاؤڈ سپیکر ہٹانے کا کام کر رہی ہے، لیکن وہاں ڈی جے کی دھن پر فحش رقص ہو رہا ہے۔ ملک بھر کے بیئر بار میں دن رات چوراہوں پر لوگ شراب پیتے ہیں اور سڑکوں پر بڑی تعداد میں لاؤڈ سپیکر لگا کر ڈی جے بجاتے ہیں جس کی وجہ سے آلودگی تیزی سے پھیلتی ہے اور یہ تمام کام بغیر اجازت کے کیے جاتے ہیں، جب ہو سکتا ہے۔ مقدس مقامات پر زیادہ تر لاؤڈ اسپیکر لگانے پر پابندی، پھر ایسی جگہوں پر کیوں نہیں، انہوں نے کہا کہ اگر ریاستی حکومتیں اور مرکزی حکومت اس سلسلے میں کوئی کارروائی نہیں کرتی ہے تو ہم جلد ہی اس معاملے میں سپریم کورٹ جائیں گے۔

اس پرمسرت موقع پر قومی صدر ڈاکٹر ایم آر انصاری، ڈاکٹر حاجی آئی اے ایس جاما، پرسون گوسوامی، ایڈوکیٹ معراج انصاری، صلاح الدین گوری، ڈاکٹر جی ایس کمبوج، ڈاکٹر ڈاکٹر ایس کے پونیا، پونیت کھرے، منیشا پونیت کھرے، شری رام، دیگر موجود تھے۔ رفیق طالب بیگ، مولانا عبد الصمد، مولانا عبدالمجید، محمد نعیم، شیخ رحمن، عبدالمعروف، ایس کے سراج الحق، تحسیم انصاری، شیخ حمید اللہ، ویبھا کشیپ، سید حسن امام، حاجی کامل رسول، شیخ ابو فہیم، حلیم خان، شعیب خان۔ فاروق، موشمی بھٹاچاریہ، ٹی مہیندر، ڈاکٹر آر این ستیارتھی، پنچاسیلا، نوشاد انصاری، بالا رام شرما، وکاس گپتا، رادیش شرما، شیخ اقبال، سید سہیل، حاجی سید لائک، کرناٹک حاجی مظفر علی، شیخ مستان، معین اختر خان، آرتی۔ راجپوت، ڈاکٹر شیخ آرزو، نوید شیخ، ایڈوکیٹ ساجد، گنیش چیوان، سنیل، وزیر شری گنیش شندے ایم ایل اے مہادیو بابر ایم ایل اے پرشانت جگتاپ وغیرہ سینئر مہمان خصوصی اور اپنی نیشنل ایگزیکٹو کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اپنا ایوارڈ غریبوں کے نام وقف کر دیا۔

 

 

متعلقہ خبریں

Back to top button