ماں کی لاش موٹر سائیکل لاش لے گئے بیٹے

بھارت کی ریست مدھیہ پردیش کے الٹ گاؤں کے دو بیٹوں کو اپنی ماں کی لاش 12 کلومیٹر تک موٹر سائیکل پرلے جانی پڑی. ایمبولینس کی سہولت نہ مل پانے کی وجہ سے انہیں ایسا کرنا پڑا .70 سالہ پروتا بائی طویل وقت سے بیمار تھیں. ان کی طبیعت اچانک بگڑ جانے پر اہل خانہ نے مدھیہ پردیش کے سوني ضلع میں ایمبولینس کے لئے کال کیا. ان کے بیٹوں نے کئی بار وہاں کال کیا لیکن ایمبولینس کا انتظام پھر بھی نہیں ہو سکا. پروتا بائی کی طبیعت بگڑتی ہی جارہی تھي تھک ہار جب بیٹوں کے پاس کوئی راستہ نہیں بچا تو انہوں نے اپنی بیمار ماں کے علاج کے لئے انہیں موٹر سائیکل پر بٹھا کر ہسپتال تک لے جانے کا فیصلہ کیا وہ اپنی ماں کو لے ہی جا رہے تھے کہ راستے میں ماں نے دم توڑ دياجب پروتا بائی کے بیٹوں کو یہ احساس ہوا کہ ان کی ماں اب زندہ نہیں رہی تو انہوں نے پھر سے ایمبولینس کوکال کیا. اس بار ایمبولینس تو آئی لیکن اس ڈرائیور نے لاش کو گھر تک لے جانے سے انکار کر دیا. بیٹوں نے ڈرائیور سے کئی بار لاش کو گھر تک لے جانے کی گزارش کی لیکن وہ نہیں مانا. جس کے بعد دونوں بیٹےاپنی ماں کی لاش کو12 کلومیٹر تک موٹر سائیکل پر ہی لے گئے.