سونے کی اسمگلنگ کا سب سے بڑا ریاکٹ بے نقاب

ریوینیو انٹلی جنس کی ڈائریکٹوریٹ (ڈی آر آئی) کے دلی زونل یونٹ (ڈی یزڈ یو) نے سونے کی اسمگلنگ کے ایک ریاکٹ کا پردہ فاش کیا ہے۔ جس میں پچھلے ڈھائی سال کے دوران 2000 کروڑ روپے سے زیادہ کی تقریباً 7000 کلو گرام سونے کی اسمگلنگ کی گئی۔ ہندوستان میں سونے کی اسمگلنگ کا یہ اب تک کا سب سے بڑا معاملہ ہے جس کا کسی ایجنسی نے پتہ لگایا ہے۔
یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب ڈی آر آئی کے دلی زونل یونٹ نے پہلی ستمبر 2016 اور 2 ستمبر 2016 کی درمیانی رات میں دہلی کےاندراگاندھی ہوائی اڈے کے گھریلو کارگو ٹرمنل سے 10 کلوگرام سونا پکڑا۔ 24 قیراط سونے کی چھڑیں مبینہ طور پر ہند- میانمار زمینی سرحد سے اسمگل کی گئی تھیں اور انہیں ایک گھریلو پرواز کے ذریعہ گواہاٹی سے دلی لایا جارہا تھا۔ ضبط کئے گئے اس سونے کی قیمت 301 کروڑ روپے ہے۔ اس معاملے میں ڈی آر آئی ائیرلائن کے ملازمین اور دیگر کے ملوث ہونے کے بارے میں چھان بین کررہی ہے۔
اس ریکٹ میں سونا اسمگل کرنے کے لئے ایک انوکھا طریقہ اپنایا تھا جس میں 617 مواقع پر اسمگل کیا ہوا سامان گوہاٹی سے دلی لایا گیا۔ ایک خاص ائیرلائن کے ذریعہ چلائی جانے والی پروازوں میں اس سامان کو کسٹم کی چھان بین سے بچنے کے لئے ‘‘ قیمتی کارگو ’’کے طور پر لایا جا تاتھا۔ اب تک اسمگلنگ کرنے والے بسوں اور ٹرینوں کے ذریعہ سونا ملک کے مختلف حصوں میں لے جاتے تھے۔
ڈی آر آئی نے اس سلسلے میں گوہاٹی کے ایک تاجر اور اس کے دلی میں رہنے والے معاو ن کو دلی سے گرفتار کیا ہے اور انہیں عدالتی تحویل میں دے دیا گیا ہے۔ گوہاٹی کا یہ تاجر شخص پہلے بھی سونے کی اسمگلنگ میں ملوث رہا ہے اور پہلے 9 کروڑ روپے کی قیمت کا 37 کلوگرام سونا ڈی آر آئی نے ضبط کیا تھا۔ اسے 2015 میں بھی ڈی آر آئی کے گوہاٹی یونٹ نے 12 کلوگرام سونے کی اسمگلنگ کے لئے گرفتار کیا تھا لیکن بعد میں ضمانت پر رہا کردیا گیا تھا۔
خفیہ اطلاعات سے پتہ چلتا ہے کہ غیر ملکی سونے کی چھڑیں میانمار سے ہند- میانمار سرحد کے راستے منی پور کے موریہ اور میزورم کے زوخاتھر میں اسگل کیا جاتا ہے۔
البتہ ڈی آر آئی غیر ملکی سونے کی بڑی مقدار ضبط کرنے میں کامیاب رہی ہے جو میانما سے اسمگل کیا جاتا ہے۔ ڈی آرئی نے مارچ 2015 میں دلی گوڑی سے 87 کلوگرام، اگست 2016 میں کولکاتہ سے 58 کلوگرام سونا پکڑ اتھا۔ اس سلسلے میں کولکاتہ سے 12 افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔
ڈی آر آئی نے حالیہ برسوں میں کافی کامیابی حاصل کی ہے۔ ڈی آر آئی نے رواں مالی سال میں بھی 18 ستمبر 2016 تک 91 کروڑ روپے کا سونا ضبط کیا ہے۔