جرائم و حادثات

حیدرآباد‌ میں ‌15 سالہ لڑکی سے کروائی جارہی تھی زبردستی جسم فروشی۔ پولیس نے دو خواتین کو کرلیا گرفتار

حیررآباد: حیدرآباد کی بہادر پورہ پولیس نے ایک نابالغ لڑکی کو بچا لیا جس سے زبردستی جسم فروشی کروائی جا رہی تھی۔ پولیس نے بتایا کہ 15 سالہ لڑکی گزشتہ ماہ اپنی بہن سے جھگڑے کے بعد ملازمت پیشہ والدہ سے ملاقات کے لیے گھر سے روانہ ہوئی تھی، راستہ میں راجندر نگر علاقے میں دو آٹو ڈرائیورس حفیظ اور سمیر نے مدد کے بہانے اسے ایک مقام پر لے جا کر بے ہوشی کی دوا بلاکر اس کی عصمت ریزی کی، کئی دنوں تک اسے زبردستی محروس رکھ کر اس کا جنسی استحصال کیا گیا۔ بعد ازاں انہوں نے لڑکی کو دوسرے مقام پر منتقل کردیا جہاں اس سے زبردستی جسم فروشی کروائی جا رہی تھی، نابالغ لڑکی نے کسی طرح فون سے انسٹا گرام کے ذریعے اپنی بہن کو اس بات کی اطلاع دی اور اس نے بہادر پولیس سے شکایت کی۔ پولیس نے اس مقام پر دھاوا کرکے لڑکی کو بچا لیا اور اس سے جسم فروشی کروانے والی دو خواتین عائشہ اور ثنا کو گرفتار کرلیا جبکہ دو آٹو ڈرائیورس فراری میں ہیں پولیس انہیں تلاش کر رہی ہے۔ پکڑی جانے والی خواتین میں ملزمین میں شامل ایک آٹو ڈرائیور کی بیوی بتائی گئی ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button