راج ناتھ سنگھ کا بحرین کے وزیر لیفٹیننٹ جنرل سے تبادلہ خیال

وزیر داخلہ جناب راجناتھ سنگھ نے، جو ،ان دنوں بحرین کے تین روزہ دورے پر ہیں، وہاں اپنے ہم عہدہ وزیر لیفٹیننٹ جنرل شیخ راشد بن عبداللہ الخلیفہ سے بحرین کے دارالحکومت مناما میں، کل تفصیلی طور پر تبادلہ خیال کیا ہے۔
طرفین نے ایک مفید گفت وشنید کا اجلاس منعقد کیا جس میں بحرین کے داخلی امو رکے وزیر نے وزیر داخلہ جناب راجناتھ سنگھ اور ان کے وفد کا استقبال کیا اور اپنی افتتاحی تقریر میں لیفٹیننٹ جنرل شیخ راشد نے کہا کہ بحرین مشرق اور مغرب دونوں سے مربوط رہا ہے اور اس کی ایک باقاعدہ تاریخ ہے۔ انہوں نے بھارت کے ساتھ بحرین کے خصوصی تعلقات کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ مملکت میں بڑی تعداد میں بھارتی برادری موجود ہے۔ جناب شیخ راشد نے کہا کہ بحرین ایک روادار، پُرامن اور وسیع النظر ملک ہے۔
لیفٹیننٹ جنرل شیخ راشد نے جناب راجناتھ سنگھ کو ان مندروں اور کمیونٹی مراکز کو بھی ملاحظہ کرنے کی دعوت دی جن سے بحرین کے معاشرے کی گوناں گونی کا اظہار ہوتا ہے۔ لیفٹیننٹ جنرل شیخ راشد نے کہا کہ بحرین میں مقامی اور بھارتی افراد نسل در نسل رہتے آئے ہیں اور دونوں حکومت کے اضافی ترقیاتی کاموں میں تعاون دیتے رہے ہیں۔
لیفٹیننٹ جنرل شیخ راشد نے دونوں ممالک کے مابین دستخط شدہ معاہدے کے ایک حصے کے طور پر جس کا تعلق سلامتی تعاون کو از سر نو نافذ کرنے ، دہشت گردی کے انسداد خصوصاً علاقائی دہشت گردی جیسے معاملات سے ہے ، کے سلسلے میں بحرین ۔ بھارتی مشترکہ اسٹیئرنگ کمیٹی کی اولین میٹنگ کا بھی خیرمقدم کیا۔ انہوں نے کہا کہ بحرین نے دہشت گردی کے واقعات کا سامنا کیا ہے اور اس کے نتیجے میں جانی اتلاف ہوا ہے اور خوفناک جراحتیں بھی ہوئی ہیں اور بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچا ہے۔
بحرین کے داخلی اُمور کے وزیر نے کہا کہ ہم دہشت گردی کے خلاف جدوجہد اور اپنی باہمی اور علاقائی سلامتی کو مستحکم بنانے کے سلسلے میں باہم مل جل کر کام کرنے اور آگے بڑھنے کی امید رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مشترکہ اسٹیئرنگ کمیٹی کو ان امکانات کا جائزہ لینا چاہئے جن کے تحت ہم باہم مل جل کر چنوتیوں کا سامنا کرسکتے ہیں اور وفود اور ماہرین کے تبادلے کے توسط سے طے شدہ فیصلوں کے سلسلے میں آگے بڑھ سکتے ہیں اور مشترکہ نصب العینوں کے حصول کیلئے اقدام کرسکتے ہیں۔