ہماچل پردیش کھلے عام رفع حاجت سے پاک ملک کی دوسری ریاست

ہماچل پردیش کو آج کھلے میں رفع حاجت سے پاک ریاست قرار دیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی سکم کے بعد اس ہدف کو حاصل کرنے والی ملک کی دوسری ریاست بن گیا ہے۔ ریاستی حکومت نے آج ریاست شملہ میں منعقدہ ایک تقریب میں یہ اعلان کیا ہے۔ اس تقریب میں وزیراعلیٰ جناب ویر بھدرسنگھ نے اس اہم سنگ میل کے حصول کیلئے متعلقہ ڈسٹرک ایڈمنسٹریٹرز اور مقامی ایڈمنسٹریٹرز کی عزت افزائی کی۔ صاف پانی، صفائی ستھرائی، دیہی ترقی اور پنچایتی راج کے مرکزی وزیر جناب نریندر سنگھ تومر اور صحت وکنبہ بہبود کے وزیر جناب جے پی نڈا بھی اس موقع پر موجود تھے۔

اس کے ساتھ ہی  ہماچل پردیش نے ریاست کے 12 میں سے تمام بارہ اضلاع کے ساتھ ریاست میں صد فیصد مکمل دیہی صفائی ستھرائی کا احاطہ کیا گیا ہے اور کھلے میں رفع حاجت سے پاک ریاست کے طور پر تصدیق بھی کی گئی ہے۔

اس موقع پر وزیراعلیٰ جناب ویر بھدر سنگھ نے کہا کہ انہیں اس بات کی خوشی ہے کہ ان کی ریاست ملک میں اس ہدف کو حاصل کرنے والی پہلی بڑی ریاست بن گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست ہماچل پردیش کو سووچھ بھارت کے خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے میں مدد کیلئے اس سفر میں اسے جو تجربات حاصل ہوئے ہیں، انہیں دوسری ریاستوں کے ساتھ شیئر کرنے میں خوشی ہوگی۔ اس موقع پر صاف پانی اور صفائی ستھرائی، دیہی ترقی اور پنجایتی راج کے وزیر جناب نریندر سنگھ تومر نے کہا کہ ہماچل پردیش اس وقت تک اس سنگ میل کو حاصل کرتا جب تک ریاست میں صفائی ستھرائی ، جن آندولن نہیں بنتا۔

صحت اور کنبہ بہبود کے مرکزی وزیر جناب جے پی نڈا نے کہا کہ ہماچل پردیش ان کی ہوم ریاست ہے اس لئے یہ موقع ان کیلئے دوہری خوشی لایا ہے۔ انہوں نے دیہی ہندوستان میں صفائی ستھرائی اور چھی صحت کے درمیان کے رشتے کا بھی ذکر کیا۔ اس موقع پر صاف پانی اور صفائی ستھرائی کی وزارت کے سکریٹری جناب پرمیشورن ایئر، ہماچل پردیش کے چیف سکریٹری جناب ودیا چندر پھرکا اور دوسری اہم شخصیات موجود تھیں۔