ممبئی میونسپل کارپوریشن کے انتخابات میں 56 فیصد راے دہی، 23 فروری کو نتائج

 ممبئی ۔21 فروری ( اردو لیکس) ممبئی میونسپل کارپوریشن کے انتخابات میں 56فیصد ریکارڈ توڑ راے دہی ہوئی ہے 228 رکنی کارپوریشن کے لئے اج راے دہی پرامن طور پر اختتام کو پہنچی۔اس مرتبہ عوام نے بڑھ چڑھ کر ووٹ کیا ہے گزشتہ انتخابات میں 50 فیصد عوام نے ہی ووٹ کیا تھا  2011کی مردم شماری کے مطابق ممبئی میں ووٹروں کی تعداد 12کروڑ 5 لاکھ ہوئی ہے اور آج ہوئے الیکشن میں عوام نے 56فیصد ووٹ کیا ہے حالانکہ کہ میونسپل کارپوریشن اور ریاستی الیکشن کمیشن کی جانب سے ووٹ دینے کے لیے جو بیداری مہم چلائی گئی تھی اس کا بہت ہی تھوڑا اثر ہوا ہے کارپوریشن اور اور حکومت کو اس سے بھی زیادہ ووٹنگ ہونے کی امید تھی ۔اس الیکشن میں ووٹنگ کے دوران بڑی تعداد میں عوام پریشان نظر آئی اس کی وجہ یہ تھی کہ اس بار وارڈوں کی حد بندی کی گئی تھی اور اس کے وجہ سے پولنگ بوتھ میں بھی تبدیلی کی گئی تھی اس کے علاوہ جو ووٹ دینے کی جو پرچی تقسیم کی گئی تھی اس میں بوتھ نمبر اور جہاں ووٹ دینا ہے اسکا نام نہ ہونے کی وجہ سے عوام میں کافی غصہ بھی دیکھنے کو ملا ہے اور کئی جگہو ں پر اس وجہ سے پولیس کے ساتھ ہلکی جھڑپ بھی ہوئی ہے سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے پیغا۲م کے مطابق 10 ؍لاکھ ووٹروں کے نام غائب تھے یا پھر فوٹو میں گڑبڑی کی گئی تھی یعنی نام کسی کا اور فوٹو کسی کا اس وجہ سے بھی کئی لوگ ووٹ کرنے سے محروم رہے گئے ہیں لیکن لاکھوں لوگوں کے نام ووٹرس لسٹ سے غائب ہونے کی بات کی سرکاری طور پر تصدیق نہیں ہوئی ہے ۔اب 23فروری کو کون کون کامیاب ہوتا ہے اس پر سب کی نظریں ٹکی ہوئی ہے ۔ممبئی میونسپل کارپوریشن کے 228 وارڈوں میں 60وارڈ ایسے ہے جہاں پر مسلمان اکثریت میں ہے