نیشنل

عقیدت کے نام پرتشدد برداشت نہیں کیا جائے گا: وزیراعظم نریندرمودی

نئی دہلی 27 اگست/ وزیراعظم نریندر مودی نے ہریانہ میں پرتشدد واقعات کے تناظر میں عقیدت کےنام پر تشدد پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قانون ہاتھ میں لینے کا کسی کو حق نہیں ہے اور عقیدت کے نام پر تشدد برداشت نہیں کیا جائے گا۔ وہ آج آکاش وانی سے من کی بات پروگرام کے زریعہ ملک کے عوام سے خطاب کررہے تھے۔ انھوں نے ہریانہ میں ہوئے پر تشدد واقعات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے سخت الفاظ میں کہا کہ کسی بھی طرح کے تشدد کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ نریندرمودی نے یاد دلایا کہ انہوں نے لال قلعہ سے بھی کہا تھا کہ عقیدت کے نام پر تشدد برداشت نہیں ہوگا چاہے وہ فرقہ وارانہ عقیدت ہوسیاسی نظریہ کے تئیں عقیدت ہو یا روایات کے تئیں عقیدت ہو۔عقیدت کے نام پر کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں لینے کا حق نہیں ہے۔ وزیر اعظم نے صاف صفائی پر زور دیتے ہوئےبابائے قوم مہاتما گاندھی کے خوابوں کا ہندوستان بنانے کے لئے دو اکتوبر سے پہلے ملک بھر میں ’سوچھتا ہی سیوا‘ کی مہم شروع کرنے کا اپیل کی ۔ انھوں نے بتایا کہ ان کی حکومت کی طرف سے شروع کی گئی صفائی مہم کو دو اکتوبر کو تین سال پورے ہو جائیں گے۔اس پروگرام کے مثبت نتائج نظر آئے ہیں اورملک میں دو لاکھ 30 ہزار سے زیادہ گاوں کھلے میں رفع حاجت سے پاک ہوچکے ہیں۔

 D-1

متعلقہ خبریں

Back to top button