بزنس

یکم جولائی سے ملک بھر میں سنگل یوز پلاسٹک اشیاء پر پابندی _ خلاف ورزی پر بھاری جرمانے

حیدرآباد_ 25 جون ( اردولیکس) مرکزی حکومت نے یکم جولائی سے ملک میں پلاسٹک ویسٹ مینجمنٹ رولز 2016 کے تحت سنگل یوز پلاسٹک کے ڈسپوزایبل پیالوں، چمچوں، شیشوں، بوتلوں، تھرموکول وغیرہ پر پابندی لگانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے

12 اگست 2021 کا نوٹیفکیشن یکم جولائی 2022 سے مندرجہ ذیل شناخت کردہ واحد استعمال شدہ پلاسٹک اشیاء کی تیاری، درآمد، ذخیرہ، تقسیم، فروخت اور استعمال پر پابندی عائد کرتا ہے، جن کی افادیت کم اور گندگی پھیلانے کی اہلیت زیادہ ہوتی ہے

پلاسٹک اسٹک والے ایر بڈ، غباروں کے لیے پلاسٹک اسٹک ، پلاسٹک کے جھنڈے، کینڈی اسٹک ، آئس کریم اسٹک، سجاوٹ کے لیے پولی اسٹیرین [تھرموکول]۔

پلیٹیں، کپ، گلاس، کانٹے، چمچہ، چاقو، بھوسے، ٹرے جیسےکٹلری ، مٹھائی کے ڈبوں کے ارد گرد لپیٹنے یا پیک کرنے والی فلمیں، دعوت نامہ، سگریٹ کے پیکٹ، 100 مائکرون، اسٹرر سے کم کے پلاسٹک یا پی وی سی بینرز۔

شناخت شدہ اشیاء کی سپلائی پر پابندی عائد کرنے کے لیے قومی، ریاستی اور مقامی سطح پر ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ سڑکوں پر سنگل یوز پلاسٹک کی اشیا پھینکنے پر 500 روپئے تک جرمانہ عائد کیا جائے گا اور دکانوں میں پلاسٹک کی اشیاء فروخت کرنے والوں کو 5 ہزار روپے تک جرمانہ عائد کئے جائیں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button