بزنس

آج پیر سے کھانے پینے کی اشیاء کے ساتھ روزانہ استعمال میں آنے والی چیزیں ہوگئی مہنگی

نئی دہلی _ 18 جولائی ( اردولیکس ڈیسک) ملک بھر میں آج پیر سے کھانے پینے کی کئی اشیاء مہنگی ہوگئیں ہیں ان میں پیک شدہ اور لیبل شدہ کھانے کی اشیاء جیسے  چاول ،آٹا، پنیر اور دودھ ، دہی شامل ہیں، جن پر 5 فیصد گڈس اینڈ سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) لگے گا۔

اس طرح 5000 روپے سے زیادہ کرایہ پر لینے والے ہاسپٹل کے کمروں پر بھی جی ایس ٹی ادا کرنا پڑے گا۔ اس کے علاوہ 1000 روپے یومیہ سے کم کرایہ پر لینے والے ہوٹل کے کمروں پر 12 فیصد جی ایس ٹی لگا دیا گیا ہے۔ ابھی تک اس پر کوئی ٹیکس نہیں ہے۔

اسی طرح ٹیٹرا پیک اور بینک کی طرف سے جاری کردہ چیک پر 18 فیصد جی ایس ٹی اور اٹلس سمیت نقشوں اور چارٹس پر 12 فیصد جی ایس ٹی لگایا جائے گا۔

کھلے طور پر فروخت ہونے والی غیر برانڈڈ مصنوعات پر جی ایس ٹی کی چھوٹ جاری رہے گی۔ پرنٹنگ اور ڈرائنگ انک، تیز چاقو، کاغذ کاٹنے والے چاقو اور پنسل شارپنرز ، ایل ای ڈی لیمپ، ڈرائنگ اور مارکنگ مصنوعات پر ٹیکس کی شرح بڑھا کر 18 فیصد کر دی گئی ہے۔سولار واٹر ہیٹر پر اب 12 فیصد جی ایس ٹی لگے گا جو پہلے 5 فیصد ٹیکس تھا۔

سڑک، پل، ریلوے، میٹرو، ویسٹ ٹریٹمنٹ پلانٹ اور شمشان گھاٹ کے کام کے معاہدوں پر اب 18 فیصد جی ایس ٹی لگے گا، جو اب تک 12 فیصد تھا۔

تاہم، روپ ویز اور بعض سرجیکل آلات کے سامان اور مسافروں کے ٹرانسپورٹ پر ٹیکس کی شرح کو کم کر کے 5 فیصد کر دیا گیا ہے۔پہلے یہ 12 فیصد تھا۔

ٹرک، سامان کی ٹرانسپورٹ کے لئے استعمال ہونے والی گاڑیاں، جن میں ایندھن کی قیمت بھی شامل ہے، پر اب 12 فیصد جی ایس ٹی لگے گا جو اس وقت 18 فیصد ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button