حیدرآباد میں کمسن لڑکی کی عصمت ریزی وقتل۔ ملزم پکڑا گیا

حیدرآباد: حیدرآباد کے سعید آباد، سنگارینی کالونی میں کمسن بچی کے ریپ اورقتل کی واردات میں ملوث ملزم کو سٹی پولیس نے گرفتارکرلیا۔ باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ملزم راجو ضلع یادادری بھونگیرمیں چھپا ہوا تھا سٹی پولیس کی خصوصی ٹیم نے اسے گرفتارکرکے حیدرآباد منتقل کیا۔
واضح رہے کہ اس وحشیانہ واقعہ کے بعد برہم مقامی افراد نے لڑکی  سے زیادتی اور قتل کرنے والے ملزم راجو  کو ان کے حوالے کرنے اور  سخت سزا دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے چمپا پیٹ روڈ پر دھرنا دیا تھا جس کے باعث اس علاقے میں شدید کشیدگی پھیل گئی تھی۔اس واقعے پر متاثرہ کے اہل خانہ اور مقامی لوگوں نے کل احتجاج کرتے ہوئے راستہ روک دیا تھا جس کے باعث چمپا پیٹ سے ساگر روڈ تک سڑک پر تقریبا 7  گھنٹے ٹریفک جام رہی ۔ حیدرآباد کے ضلع کلکٹر شرمن اور ڈی سی سی رمیش ریڈی نے مظاہرین سے بات کی۔ کلکٹر نے یقین دلایا کہ لڑکی کے خاندان کا خیال حکومت کی جانب سے رکھا جائے گا اور دو بیڈروم کا مکان  اور خاندان کے کسی ایک کو ملازمت  دی جائے گی۔ 50 ہزار روپے کی  امداد دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ خاندان کے دو دیگر بچوں کو مفت تعلیم فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ملزم کو جلد از جلد سزا دلوائی جائے گی۔

قبل ازیں جناب سید احمد پاشاہ قادری رکن اسمبلی مجلس نے کمشنرپولیس حیدرآباد انجنی کمار سے ملاقات کرتے ہوئے سعید آباد واقعہ کے ملزم کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کرنے اوراسے فوری گرفتارکرنے کا مطالبہ کیا تھا۔
لڑکی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ لڑکی کی عصمت ریزی کی گئی اورگلا گھونٹ کراس کا قتل کردیا گیا۔