جرائم و حادثات

تلنگانہ کے ورنگل ضلع میں خانگی فینانسرس کی ہراسانی سے تنگ آکر ایک مسلم خاتون نے کی خودکشی کی کوشش

ورنگل _ 30 جولائی ( اردولیکس) تلنگانہ میں خانگی فینانسر کی ہراسانی سے تنگ آکر ایک مسلم خاتون نے پولیس اسٹیشن کے احاطے میں  خودکشی کی کوشش کی۔ یہ واقعہ ایک دن کی تاخیر سے سامنے آیا۔ متاثرہ  خاتون کی شناخت آفرین  کی حیثیت سے ہوئی ہے جو ورنگل کے ایم جی ایم ہاسپٹل میں زیر علاج ہے

 

تفصیلات کے مطابق  ورنگل کے کتہ واڑہ کی رہنے والی آفرین نے فینانسر ریحان سے 70 ہزار روپے اور کننا نامی ایک اور فینانسر سے 70 ہزار روپے قرض لی تھی ۔ قرض کے عوض فینانسر ریحان،  آفرین سے روزانہ 750 روپے وصول کر رہا تھا، وہیں کننا 30،000 روپے ماہانہ وصول کر رہا تھا۔ اب تک اس نے دونوں فینانسر کو  70 ہزار روپے تک ادا کر چکی ہے ۔ درمیان میں کچھ مشکلات کی وجہ سے آفرین نے رقم ادا نہیں کی ۔ بتایا جاتا ہے کہ دونوں فینانسر نے آفرین کو سود کے ساتھ 7 لاکھ روپے تک رقم ادا کرنے کا مطالبہ کررہے تھے اور رقم نہ دینے کی صورت میں دھمکیاں بھی دے رہے تھے ۔فینانسرس کی دھمکیوں سے تنگ آکر آفرین نے  مٹواڈا پولیس اسٹیشن میں ان دونوں کے خلاف شکایت درج کرانے گئی۔

 

لیکن پولیس نے فینانسرس کو طلب کرتے ہوئے تفصیلات حاصل کیں اور ان تینوں کو باہر جا کر بات چیت کے ذریعہ مسئلہ ختم کرلینے کا مشورہ دیا۔ یہ تینوں پولیس اسٹیشن کے احاطے میں بات کر رہے تھے ۔ اس دوران ریحان اور کننا نے انہیں 7 لاکھ روپے دینے کا دوبارہ مطالبہ کیا۔ جس پر برہم ہوتے ہوئے آفرین  نے پرس میں  لائی ہوئی  ہیئر ڈائی پی کر خودکشی کی کوشش کی۔بتایا گیا ہے کہ آفرین کے ساتھ آئی ایک اور خاتون آفرین کو ورنگل ایم جی ایم اسپتال لے گئی۔ متواڈا پولیس اسٹیشن کے سرکل انسپکٹر سی ایچ رمیش نے بتایا کہ آفرین نے ان سے دونوں فینانسرس کے خلاف شکایت کی تھی جس پر آفرین کو بات چیت کے ذریعہ مسئلہ ختم کرلینےکا مشورہ دیا گیاتھا، لیکن ان کے درمیان جھگڑا ہوا اور آفرین نے ہیئر ڈائی پی کر خودکشی کی کوشش کی ۔ اگر آفرین کے گھر والے  شکایت درج کرواتے ہیں تو وہ مقدمہ درج کر کے تفتیش کریں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button