حیدرآباد میں 300 لوگوں کو دھوکہ دیتے ہوئے 2 کروڑ روپے بٹورنے والی شاطر خاتون گرفتار

حیدرآباد _ زائد منافع کا لالچ دیکر 300 لوگوں سے 2 کروڑ روپے کی رقم بٹورنے والی  ایک شاطر خاتون  32 سالہ پلوی ریڈی ساکن پیرزادی گوڑہ اور اس کے ساتھ پی سنجے 34 سالہ ساکن دمانی گوڑہ کو حیدرآباد کی جواہر نگر پولیس نے گرفتار کرلیا۔ پلوی ریڈی نے ایک موٹرسیکل شوروم کو قائم کیا اور اس کی دیگر دو برانچس بھی چلارہی تھی۔ اس نے موٹرسیکل کی کل رقم کا 60 فیصد ادا کرنے پر 40 فیصد ڈسکاؤنٹ کی پیشکش کرتے ہوئے عوام سے رقم حاصل کررہی تھی اور 20 فیصد ادا کرتے ہوئے موٹرسیکل کو فینانس پر دلارہی تھی اور باقی رقم کو جو 12 اقساط پر ادا کرنے پڑتے ہیں وہ رقم وہ خود ادا کرتی تھی جس کیلئے اس نے مزید 4 افراد کو اس اسکیم سے جوڑنے کی شرط رکھی تھی۔ اس طرح کے دیگر دو اسکیمات کے ذریعہ وہ اپنا غیرمجاز کاروبار کررہی تھی۔ اس خاتون کے خلاف ایک لڑکی نے شکایت کی تھی۔ پولیس کے مطابق پلوی ریڈی نے 50 فیصد ادا کرتے ہوئے (100) دن انتظار کرنے پر گاڑی فراہم کرنے کی اسکیم کو بھی شروع  کیا تھا۔ ان  اسکیموں کے ذریعہ اس نے 300 لوگوں  سے 2 کروڑ روپئے حاصل کئے تھے۔ پولیس نے دونوں کو گرفتار کرتے ہوئے عدالتی تحویل میں دے دیا۔