خاتون کانسٹیبل کی اجتماعی عصمت ریزی کا گھناونا واقعہ

بھوپال _ مدھیہ پردیش میں ایک خاتون پولیس کانسٹیبل کی اجتماعی عصمت ریزی کا گھناونا واقعہ پیش آیا۔ خاتون کانسٹیبل نے الزام لگایا  کہ مدھیہ پردیش کے ضلع نیموچ میں تین مردوں نے اس کے ساتھ اجتماعی عصمت ریزی کی اور سارے واقعہ کی فلمبندی کی اور  اسے جان سے مارنے کی دھمکی دی۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ رواں ماہ کے اوائل میں پیش آیا تھا لیکن 30 سالہ خاتون کانسٹیبل نے 13 ستمبر کو شکایت درج کروائی جس کے بعد تحقیقات کی گئی اور پانچ افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔ ملزمین میں اہم  ملزم کی ماں بھی شامل ہے۔

پولیس نے بتایا کہ اپنی شکایت میں خاتون نے دعویٰ کیا کہ اہم ملزم ، اس کے بھائی اور ایک اور شخص نے سالگرہ کی تقریب میں اس کے ساتھ زیادتی کی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اہم  ملزم کی والدہ نے اسے مزید بلیک میل کیا اور ایک رشتہ دار نے اسے جان سے مارنے کی دھمکی بھی دی اور اس سے پیسے لینے کی کوشش کی۔

ملزم نے متاثرہ لڑکی سے فیس بک پر دوستی کی تھی اور اپریل سے اس کے ساتھ واٹس ایپ پر بات چیت کر رہا تھا۔ انہوں نے متاثرہ خاتون کو اپنے چھوٹے بھائی کی سالگرہ کی تقریب میں مدعو کیا ، جہاں تین افراد نے اس کے ساتھ زیادتی کی۔