مرکزی وزیر کے بیٹے آشیش مشرا گرفتار _ 12 گھنٹوں کی ہوئی پوچھ تاچھ

لکھنو _ اتر پردیش پولیس نے ہفتہ کی رات  مرکزی مملکتی وزیر داخلہ اجے مشرا کے بیٹے آشیش مشرا ٹینی کو گرفتار کرلیا ۔ انہوں نے اتر پردیش میں لکھیم پور تشدد کیس میں اپنے آپ کو پولیس کے حوالے کردیا تھا تاہم 12 گھنٹے کی تفتیش میں تعاون نہ کرنے کے الزام میں انھیں رات 11 بجے گرفتار کیا گیا۔

آشیش مشرا کی  گرفتاری سے قبل ہفتہ کو لکھیم پور کھیری میں کرائم برانچ کے دفتر میں پوچھ گچھ کی گئی۔ ان کا فون بھی ضبط کیا گیا ۔ سہارنپور کے ڈی آئی جی اپیندر اگروال نے میڈیا کو بتایا کہ انہوں نے کچھ سوالوں کے جواب تک نہیں دیے۔تحقیقات میں تعاون نہ  کرنے پر گرفتار کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

حکام کا کہنا ہے کہ آشیش مشرا نے 3 اکتوبر کو دوپہر 2.36 بجے سے شام 3.30 بجے تک وہ کہاں تھے جس وقت ایک گاڑی نے احتجاجی کسانوں کو روند دیا تھا اس کے ثبوت فراہم نہیں کیے۔ تاہم ، پولیس نے 10 لوگوں کے دستخط شدہ حلف نامے اور ویڈیوز حاصل کیے ہیں جن میں کہا گیا ہے کہ آشیش مشرا گاڑی میں نہیں تھے جس وقت لکھیم پور کھیری میں احتجاج کرنے والے کسانوں پر  گاڑی روند دی گئی تھی